66

شادی کی تقریب میں ہونے والی فائرنگ سے خاتون کے قتل کا مقدمہ تھانہ صدر بیرونی میں درج

راولپنڈی:شادی کی تقریب میں ہونے والی فائرنگ سے خاتون کے قتل کا مقدمہ تھانہ صدر بیرونی میں درج،پولیس نے6ملزمان کو حراست میں لے لیا،شادیوں کے تقریبات میں اسلحہ لے جانے کو روکنے کے لئے سی پی او نے سخت احکامات جاری کر دئیے،ڈویژنل ایس پیز کو شادیوں کی تقریبات میں ہر قسم کی قانون شکنی روکنے کے لئے سخت مانیٹرنگ کی ہدایات جاری،تفصیلات کے مطابق سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے اتوار کو 24/7پولیسنگ کے تسلسل میں ایس پی صدر رائے مظہر اقبال کو طلب کر کے ان سے شادی کی تقریب میں فائرنگ کی زد میں آ کر جاں بحق ہونے والی خاتون کے وقوعہ کی پراگرس طلب کی،ایس پی رائے مظہر اقبال نے بریفنگ دیتے ہوئے سی پی او کو بتایا کہ تھانہ صدر بیرونی کے علاقہ میں شادی کی فائرنگ کے دوران جاں بحق ہونے والی خاتون شمیم اختر کے قتل کا مقدمہ اس کے بھائی جاوید اخترکی مدعیت میں نامعلوم ملزمان کے خلاف درج کر لیا گیا،پولیس نے 6ملزمان کو حراست میں لے لیا ہے جن سے تفتیش جاری ہے،سی پی او فیصل رانا نے کہا کہ ہمیں ہر قیمت پر بے گناہ عورت کو قتل کرنے والے ملزمان کو گرفتار کرنا ہے،شادیوں سمیت ہر قسم کی تقریبات میں ہوائی فائرنگ پر مکمل پابندی ہے،سی پی او نے راولپنڈی پولیس کے تینوں ڈویژنل ایس پیز کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے انتظامات کئے جائیں کہ شادی سمیت کسی بھی تقریب میں کسی قسم کا اسلحہ نہ جا سکے،ایس ایچ اوز شادی کی تقریبات کے حوالے سے منتظمین سے ضمانت نامہ لیں کہ وہاں پر ہوائی فائرنگ تو دورکی بات اسلحہ ہی نہیں جائے گا،سی پی او نے کہا کہ اگر آئندہ کسی شادی یا کسی قسم کی تقریب میں ہوائی فائرنگ ہوئی یا اس سے کوئی جانی نقصان ہوا تو ایس ایچ او،ایس ڈی پی او اور ایس پی سے جواب طلبی کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں