پاک فوج 89

چہلم حضرت امام حسین پر سیکورٹی کے فول پروف انتظامات کے لئے سی پی او نے پاک فوج کے دستوں کی تعیناتی،

راولپنڈی چہلم حضرت امام حسین پر سیکورٹی کے فول پروف انتظامات کے لئے سی پی او نے پاک فوج کے دستوں کی تعیناتی،موبائل سروس اور ڈبل سوار ی کی پابندی کی سفارش کر دی،قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے جو کرنا پڑا کروں گا،کسی شخص کو شرانگیزی کی ”ش“ اور نفرت کی ”ن“ بھی معاشرے میں نہیں پھیلانے دی جائے گی،ان خیالات کا اظہار سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،سی پی او نے کہا کہ سیکورٹی کے حوالے سے جو ایس او پی محرم الحرام میں تھے وہی چہلم حضرت امام حسین پر بھی ہیں جن کی ایک ایک شق پر عمل کیا جائے گا،انہوں نے کہا کہ محرم کے دوران بھی پاک فوج کے جوانوں نے سیکورٹی کے حوالے سے تاریخی ڈیوٹی دی اب چہلم کے موقع پر بھی پاک فوج کے دستوں کی تعیناتی کے لئے مجاز اتھارٹی کو درخواست کر دی گئی ہے،امید ہے کہ محرم کی طرح چہلم کے موقع پر بھی پاک فوج کے دستے سیکورٹی کے فرائض سرانجام دیں گے،انہوں نے کہا کہ جلوس کے روٹس پر موبائل فون سروس کی بندش کے لئے بھی سفارش کر دی گئی ہے جبکہ ڈبل سواری پر پابندی کے لئے بھی لکھ دیا گیا ہے،سی پی او نے کہا کہ جلوس کے روٹ کو خاردار تاریں لگا کربند کر دیا جائے گا،جبکہ جلوس کو3رویہ سیکورٹی حصار مہیا کیا جائے گا،گھڑ سوار پولیس اہلکار بھی جلوس کے ساتھ سیکورٹی ڈیوٹی دیں گے،سی پی او نے کہا کہ جلوس کے آغاز سے قبل ہی اہلکار اپنے ڈیوٹی والے مقام پر پہنچ کر مجاز اتھارٹی کو رپورٹ کریں گے،ایس ڈی پی او زاس ڈیوٹی کو چیک کریں گے جبکہ ایس پیز تمام انتظامات کی مکمل نگرانی کریں گے،سی پی او نے کہا کہ میں خود بھی جلوس کے ہمراہ ہوں گا،روایتی اور لائسنسی جلوسوں کے راستے میں کسی بھی قسم کی کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کی جائے گی جبکہ اس بات پر بھی زیرو ٹالرینس پالیسی ہے کہ کوئی جلوس مقررہ روٹ یا وقت سے ہٹ کر چلے،امن کمیٹی کے ارکان بھی جلوسوں کے ہمراہ ہوں گے،شرانگیزوں اور نفرتیں پھیلانے والوں کو قانون کی نکیل ڈال دی گئی ہے،اس طرح کے انتظامات کر لئے گئے ہیں کہ کوئی شخص شرانگیزی کی ”ش“ اور نفرت کی ”ن“ بھی معاشرے کی طرف نہیں دھکیل سکے گا،سی پی او نے کہا کہ چہلم کے موقع پر میرے دفتر میں سیکورٹی امور کی نگرانی کے لئے ایک کنٹرول قائم کردیا گیا ہے جو24/7کام کرتا رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں