Children 76

ہولی فیملی ہسپتال میں ڈاکٹروں کی غفلت و لاپرواہی کی وجہ سے مرنے والی خاتون کے معصوم بچے انصاف کے منتظر

گزشتہ دنوں ہولی فیملی ہسپتال میں ڈاکٹروں کی غفلت و لاپرواہی کی وجہ سے مرنے والی خاتون کے معصوم بچے انصاف کے منتظر

معصوم بچوں کو ماں کی گود سے محروم کرنے اور غفلت برتنے والے ڈاکٹر اور عملے کے خلاف تاحال قانونی کارروائی نا کی گئی نصیر احمد

تفصیل کے مطابق بچوں کے چچا نصیر احمد نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تحصیل مری یونین کونسل چارہان سمبل سیداں ڈھوک کنڈل کے رہائشی میرے بھائی محمد قدیر کی زوجہ کو ڈلیوری کی وجہ سے ہولی فیملی ہسپتال داخل کرایا گیا تھا بچی کی پیدائش کے بعد ڈاکٹروں اور عملے کی لاپرواہی اور غفلت کی وجہ سے دیکھ بھال نا کی گئی اور ہماری بھابھی جان کی بازی ہار گئی

یہ واقع ہولی فیملی ہسپتال کے ڈاکروں کی اور اس رات جو نرس ڈیوٹی پر موجود تھی ان کی لاپرواہی و غفلت کی وجہ سے پیش آیا اور ایک ہنستا بستا ہوا گھر اجڑ گیا ہے ہماری وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار سے اپیل ہے کہ فوری طور پر نوٹس لے اور ہولی فیملی ہسپتال انتظامیہ ڈاکٹر اور نرسوں پر قانونی کاروائی کی جاۓ تاکہ معصوم بچوں کو انصاف مل سکے اور آئندہ کسی غریب کا گھر نا برباد ہو