Rawalpindi-Development-Authority-RDA 16

غیر قانونی ہائوسنگ سوسائٹی،،،

راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی مبینہ سرپرستی میں چلنے والی غیر قانونی ہائوسنگ سوسائٹی میں اوورسیز پاکستانیزسمیت سینکڑوں شہریوں کے کروڑوں روپے کی انویسمنٹ ڈوبنے کا خدشہ پیدا ہو گیا متعلقہ ذمہ داران تاحال کسی بھی قسم کا ایکشن لینے سے گریزاں ہائوسنگ سوسائٹی مالکان دھڑلے سے پلاٹوں کی فروخت جاری رکھے ہوئے ہیں ۔با وثوق ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹی (آر ڈی اے) کے زیر انتظام علاقوں میں غیر قانونی ، جعلی اور بوگس کشمیر ہائوسنگ سوسائٹی نے مختلف فیز بنا کر اوورسیز پاکستانیوں سمیت کشمیر ، گلگت اور پاکستان کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے سادہ لوح ،معصوم شہریوں کو پلاٹوں اور بہترین انویسمنٹ کا جھانسہ دیکر دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شرو ع کر دیا ہے مذکورہ ہائوسنگ سوسائٹی جسے نہ تو آر ڈی اے کی جانب سے کوئی این او سی دیا گیا ہے اور نہ ہی اس کے پاس کوئی پلاننگ پرمیشن ہے لیکن بد قسمتی سے اس کے باوجود سوسائٹی مالکان نے مبینہ طور پر کروڑں روپوں کے پلاٹ فروخت کر دئیے ہیں جس سے شہریوں میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ سوسائٹی مالکان کو مبینہ طور پر آر ڈی اے افسران کی آشیر باد حاصل ہے یہی وجہ ہے کہ سوسائٹی آفس کو سیل کرنے سمیت تاحال ان کے خلاف کوئی قانونی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی طارق نامی سکیم انسپکٹر افسران کو نہ صرف غلط گائیڈ کر رہا ہے بلکہ سوسائٹی مالکان سے مبینہ طور پر مک مکا کر کے اس نے سارے معاملے کو ٹھپ کر دیا ہے عید سے ایک دن قبل سوسائٹی آفس سیل کرنے کے فوری بعد اسے ڈی سیل کردیا گیا افسران کو سارے معاملے کا علم ہونے کے باوجود مصروفیت کا بہانہ بنا کر سوسائٹی مالکان کو شہریوں کو لوٹنے کا لائسنس جاری کر دیا گیا ہے جس کی وجہ سے سوسائٹی مالکان آر ڈی ا ے افسران کی مبینہ سرپرستی میں شہریوں سے لوٹ مار میں مصروف ہیں ۔۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں