قتل 31

وزیرستان کے گاؤں میں ویڈیو لیک ہونے پر 2 لڑکیاں’غیرت’ کے نام پر قتل

وزیرستان کے گاؤں میں ویڈیو لیک ہونے پر 2 لڑکیاں’غیرت’ کے نام پر قتل خیبرپختونخوا کے اضلاع جنوبی و شمالی وزیرستان کے سرحدی گاؤں میں نوجوان شخص کے ساتھ موبائل ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد 2 لڑکیوں کو مبینہ طور پر گھر کے فرد کی جانب سے غیرت کے نام پر قتل کردیا۔شمالی وزیرستان میں رزمک پولیس اسٹیشن،جس کی حدود قتل کیے گئے تھے، نے 15 مئی(بروز جمعہ) ریاست کی مدعیت میں ابتدائی اطلاعی رپورٹ(ایف آئی آر) درج کرکے تحقیقات شروع کردیں۔ایف آئی آر کے مطابق واقعہ 14 مئی کو خیرپختونخوا میں شمالی اور جنوبی وزیرستان کے سرحدی گاؤں شام پلین گڑیوم میں دوپہر 2 بجے کے قریب پیش آیا۔اسٹیشن ہاؤس افسر کی جانب سے درج ایف آئی آر کے مطابق شام پلین گڑیوم میں چچا زاد بھائی کی جانب سے 16 اور 18 برس کی 2 لڑکیوں کے غیرت کے نام پر قتل کی مصدقہ اطلاع موصول ہوئی تھی جس کا نام اور پتہ معلوم نہیں۔

اس میں کہا گیا کہ غیرت کے نام پر قتل کی وجہ ایک ویڈیو کو مانا جارہا ہے ، جس میں ایک نوجوان کو باہر ویران علاقے میں 3 لڑکیوں کے ساتھ اپنی ویڈیو بناتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔وزیرستان کے سینئر پولیس افسر نے واقعے کی تصدیق کی اور میڈیا کو بتایا کہ 52 سیکنڈ پر مشتمل موبائل ویڈیو کلپ میں نظر آنے والی 3 میں سے 2 لڑکیوں کو قتل کردیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں