محمد انور کی کتاب 104

محمد انور کی کتاب کی تقریب رونمائی پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوئی

اسلام آباد پارلیمانی نظام کار اور قانون ساز اداروں کے کام کے طریقہ کار پر سابق سیکرٹری سینیٹ محمد انور کی کتاب کی تقریب رونمائی پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوئی جس میں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اراکین پارلیمنٹ، صوبائی اسمبلیوں اور پارلیمانی سٹاف کی استعداد کار بڑھانے کی اشد ضرورت ہے اور اس کتاب کی مدد سے ان مقاصد کا حصول ممکن ہوگا۔ سپیکر قومی اسمبلی نے محمد انور کی کاوش کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ یہ کتاب اراکین پارلیمنٹ، پارلیمانی سٹاف اور دیگر متعلقہ اداروں کیلئے بہترین معاونت فراہم کرے گی۔تقریب کے صدر چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے اپنے خطاب میں اس کتاب کو ایک بہت بڑا کارنامہ قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ مصنف نے اپنے 40 سالہ تجربے کو اس کتاب کی شکل میں پیش کیا ہے اور یہ ایک ریفرنس کے طور پر کام کرے گی اور اس کتاب سے پارلیمانی نظام کار اور قواعد وضوابط سے متعلق رہنمائی ملے گی۔ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا نے اس کتاب کو کاوش قرار دیا جبکہ سینیٹ میں قائد ایوان سید شبلی فراز نے کہا کہ اس کتاب کی مدد سے مقننہ اور حکومتی مشینری کو کافی حد تک رہنمائی ملے گی۔ انہوں نے سابق سیکرٹری سینیٹ محمد انور کے عزم اور حوصلے کی داد دی۔وزیر برائے پارلیمانی اومور اعظم خان سواتی نے بھی محمد انور کی اس کوشش کو سراہا اور داد دی۔ کتاب کے منصف محمد انور نے خطاب کرتے ہوئے کتاب کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی اور بتایا کہ قانون سازی سے متعلق مختلف پہلوؤں کا طریقہ کار واضح طور پر بیان کیا گیا ہے جس سے اراکین پارلیمنٹ، قومی و صوبائی اسمبلی سٹاف اور دیگر متعلقہ اداروں کو کافی حد تک رہنمائی ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ کتاب ان کی 40 سالہ تجربے کا نچوڑ ہے اور ان کی یہ خواہش تھی کہ پارلیمانی نظام کار میں بہتری لانے کیلئے کتاب کی صورت میں کچھ پیش کرسکوں۔تقریب میں اراکین پارلیمنٹ، سینیٹرز، اراکین قومی اسمبلی کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔