29

خیبر پختونخوا بلدیاتی الیکشن:پولنگ کا وقت ختم،گنتی جاری

خیبر پختونخوا کے 18 اضلاع میں بلدیاتی الیکشن کے دوسرے مرحلے میں پولنگ کے بعد ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔

دوسرے مرحلے میں صوبے کے 18 اضلاع کے65 تحصیلوں میں پولنگ ہوئی جن میں اورکزئی، کرم، شمالی وزیرستان، جنوبی وزیرستان، ایبٹ آباد، مانسہرہ، بٹگرام، تورغر، کوہستان بالا، کوہستان زیریں، کولائی پالس، سوات، شانگلہ، مالاکنڈ، دیر بالا، دیر زیریں، چترال بالا اور چترال زیریں شامل ہیں۔

ان اضلاع میں یونین کونسلز کی تعداد ایک ہزار 830 ہے۔ کُل رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 80 لاکھ 57 ہزار 474 جبکہ اس میں مرد ووٹرز 44 لاکھ 89 ہزار 771 جبکہ خواتین ووٹرز کی تعداد 35 لاکھ 67 ہزار 703 ہے۔

بلدیاتی الیکشن میں 29 ہزار 3 سو 38 امیدوار میدان میں ہیں، تحصیل مئیر اور چیرمین کی نشستوں کے لئے 651 امیدوار ہیں۔ ولیج، نیبرہڈ میں جنرل نشستوں پر 13 ہزار 331 افراد انتخابی عمل میں حصہ لے رہے ہیں، خواتین کی نشستوں پر 3 ہزار 201 امیدوار میدان میں ہیں۔ مزدور، کسان کی نشستوں پر 6602، یوتھ پر 5446 امیدوار جب کہ اقلیتی نشستوں پر 107 امیدواروں کے مابین مقابلہ ہے۔

اب تک کے غیرختمی اور غیر سرکاری نتائج

 غیرحتمی نتائج کے مطابق 22 تحصیلوں میں تحریک انصاف، 5 میں جے یو آئی اور 4 میں جماعت اسلامی کو سبقت حاصل ہے۔ دو تحصیلوں میں پیپلزپارٹی اور ایک میں ن لیگ کا امیدوار آگے ہے۔ سوات کے 7 ميں سے 6 تحصيلوں پر پی ٹی آئی کو سبقت حاصل ہے۔

تحصیل بابوزئی کے 28پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے شاہدعلی خان4684ووٹ کے ساتھ پہلے جبکہ جماعت اسلامی کے محمد امین2948 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر ہے۔ تحصیل چیئرمین کبل کے7پولنگ اسٹیشز کے غیرحتمی نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے سعید خان875 جبکہ اے این پی کے رحمت علی کو 499 ووٹ مل سکے۔

مٹہ کے 83 پولنگ اسٹيشنز  کے نتائج کے مطابق پی ٹی آئی امیدوار 22157 ووٹ ليکر آگے جبکہ جے یو آئی امیدوار  8825ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر موجود ہیں۔ خوازہ خیلہ کے 10پولنگ اسٹیشنز  کے غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی امیدوار کو 1799ووٹ ملے جبکہ مدمقابل ن لیگ کے امیدوار کو 1039 مل سکے۔

تحصیل بریکوٹ کے 18پولنگ اسٹیشنز کے غیرختمی نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے کاشف علی2130ووٹ لیکر پہلے جبکہ اے این پی کے فضل اکبر1099ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے۔

تحصیل الپوری شانگلہ کے20پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی نے5074 جبکہ ن لیگ نے3331ووٹ لئے۔

چترال کے تحصیل مستوج کے 24 پولنگ اسٹیشنز کے غیرختمی نتائج کے مطابق پی ٹی آئی 4043 جبکہ پیپلزپارٹی کو 2234ووٹ مل سکے۔

تحصیل کونسل اپردیر کے 25پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق پی ٹی آئی امیدوار 3491ووٹ کے ساتھ پہلے جبکہ جماعت اسلامی امیدوار 2664ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے۔

لوئر دیر کے تحصیل بلامبٹ کے اب تک کے نتائج میں تحریک انصاف کے امیدوارعاصم شعیب کو سبقت حاصل ہے۔

ضلع مالاکنڈ کے تحصیل درگئی کے143میں سے73پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی 15000ووٹ لے کر پہلے جبکہ پیپلزپارٹی کو 7475ووٹ مل سکے۔

ایبٹ آباد کے 61 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی امیدوار 13 ہزار 818 ووٹ لے کر پہلے جبکہ مسلم لیگ ن کے امیدوار 10 ہزار 617 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے۔تحصیل لوئرتناول کے 27پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق پی ٹی آئی امیدوار کو 4787 جبکہ آزاد امیدوار4340ووٹ حاصل کرسکے۔

تحصیل حویلیاں کی 19 پولنگ اسٹیشنز کےغیرحتمی نتائج کے مطابق آزاد امیدوار3874ووٹ لے کر پہلے جبکہ ن لیگ3384ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہے۔ تحصیل لورہ کی ایک پولنگ اسٹیشنز کے نتیجے کے مطابق ن لیگی امیدوار کو 224 جبکہ پی ٹی آئی امیدوار کو 153 ووٹ ملے۔

مانسہرہ کے تحصیل چیئرمین کے 4 پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق تحریک انصاف کے کمال سلیم خان 776ووٹ لے کر آگے جبکہ مسلم لیگ ن کے شیخ شفیع 396 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر موجود ہیں۔

تحصيل کرم سے غیرختمی نتائج کے مطابق جے يو آئی کے احسان اللہ1643 لے کرکامياب ہوگئے جبکہ تحریک انصاف کے گل فراز1299 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

تحصیل کونسل اپرکرم کے 40پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری نتائج کے مطابق ایم ڈبلیو ایم کے مزمل آغا کو 9781 جبکہ پیپلزپارٹی کے جلال حسین کو3286ووٹ ملے۔

تحصیل لوئر اورکزئی کی 23 پولنگ اسٹیشنز کے نتائج کے مطابق راہ حق پارٹی کے محمد طارق4001ووٹ لے کر آگے جبکہ تحریک انصاف کے نجم حسن نے1068ووٹ لے سکے۔

خیبر پختونخوا بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے کے نتائج

واضح رہے کہ بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں صوبے کے 17 اضلاع میں 66 تحصیل نشستوں کےلیے پولنگ گرشتہ سال 19 دسمبر کو ہوئی تھی۔ پہلے مرحلے میں جے یو آئی (ف) نے سب سے زیادہ 23 نشستیں جیت لیے تھے جبکہ تحریک انصاف 19 نشستوں کے ساتھ دوسرے ، 9 آزاد امیدوار تیسرے ، اے این پی 7 تحصیل چیئرمین کیساتھ چوتھے، مسلم لیگ ن 3، جماعت اسلامی اور تحریک اصلاحات نے 2،2 نشستیں حاصل کیں تھیں۔


اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں