news long 59

غیر قانونی تجارت میں جڑواں شہروں کے ساتھ منسلک علاقہ پنڈورہ سرفہرست ہے

وفاقی دارالحکومت کے متصل علاقے پنڈورہ کے مختلف حصوں میں منشیات کی فروخت اور استعمال بے قابو ہے۔ ہیروئن اور آئس سمیت منشیات کی غیر قانونی تجارت میں جڑواں شہروں کے ساتھ منسلک علاقہ پنڈورہ سرفہرست ہے۔ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے دیگر ادارے اس سلسلے میں کوئی کارروائی نہیں کررہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پنڈورہ کے جن علاقوں میں منشیات کے استعمال اور فروخت میں اضافہ ہورہا ہے ، وہ محمود آباد ، مٹر مارکیٹ ، بے نظیر چوک اور نجی اسکول لٹل سکالر سکول کے سامنے کیانی برادران کاپلازہ، ہوسٹل وغیرہ شامل ہیں۔ علاقے میں منشیات کے عادی افراد اور منشیات فروشوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔
اسی طرح منشیات فروش پولیس اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کی جانب سے بغیر کارروائی نہ ہونے کی وجہ ان علاقوں میں منشیات فراہم کررہے ہیں۔ پنڈورہ پولیس اسٹیشن نیو ٹاؤن کے دائرہ کار میں ہے یہ علاقہ نہ صرف وفاقی دارالحکومت بلکہ راولپنڈی میں بھی منشیات کی فراہمی کا مرکز بن گیا ہے۔ پولیس اور متعلقہ دیگر ادارے خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں-
شہریوں محمد محسن عزیز، محمد نافع خلیل، حاشر محمود، حسن مجتبی، آریز کاشف اور دیگر نے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد، کمشنر راولپنڈی اور پولیس حکام سے درخواست کی کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں اور پولیس کو پنڈورہ سے منشیات کی لعنت کو ختم کرنے کے لئے سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔