Maryam Nawaz 80

بہاولپور میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے زیر اہتمام ایک بڑی ریلی کا اہتمام کیا گیا،

بہاولپور میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے زیر اہتمام ایک بڑی ریلی کا اہتمام کیا گیا،

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے محترمہ مریم نواز نے کہا
” ‏بہاولپور والوں نے آج کمال کردیا، ماشاء اللہ، بہاولپور زندہ باد، ‏بہاولپور کےہزاروں نہیں لاکھوں عوام میرے ساتھ سڑکوں پرچلے ہیں،‏نوازشریف آپ سےٹوٹ کر پیار کرتا ہے، آپ نےپہلےسےبڑھ کرمحبت کاجواب دیا، ‏فضل الرحمان صاحب حکم کریں توٹھاٹھے مارتےعوام کاسمندراسلام آبادکی طرف موڑدوں، توجعلی وزیراعظم کومنہ چھپانےکی جگہ نہیں ملےگی،

‏نواز دور میں آٹا 35 روپے کلو تھا، آج 80/90 روپے کلو ہے،
‏نوازشریف دور میں چینی 52 روپے تھی، آج 120 روپے کلو ہے، ‏قسم کھاکرکہتی ہوں73 سال میں اتنی منہگائی،کرپٹ اورنااہل حکومت نہیں آئی ،
‏کیا منہگائی کے اس طوفان کو تبدیلی کہتے ہیں؟،
‏کیا منہگائی، نااہلی اور کشمیر فروشی کو تبدیلی کہتے ہیں؟
‏کیا تابع دار کو تبدیلی کہتے ہیں؟
‏ڈھائی سال بعد ہاتھ کھڑے کردیےکہ مجھے کام نہیں آتا،
‏نالائقی اور نااہلی کے سمندر کو تبدیلی کہتے ہیں؟
‏کیا غریب کے چولہے کی آگ بجھانے کو تبدیلی کہتے ہیں؟
‏کیا منہگی گیس جو آتی نہیں اسے تبدیلی کہتے ہیں؟
‏کیا آٹا چینی چوری کو تبدیلی کہتے ہیں؟

‏اسلام آباد میں کل 22 سال کے نوجوان کو پولیس نے سامنے سے گولیاں ماردیں،‏ نوجوان تحریک انصاف کا ماننے والا تھا، جعلی وزیراعظم کو آواز اٹھانے کی جرات نہ ہوئی،
‏بلوچستان میں کوئلے کی کان میں کام کرنے والے شہید کردیے گئے،
اور یہ ‏بار بار کہتا ہے فوج جانتی میں کرپٹ نہیں ہوں،
‏محل میں درجنوں نوکر رکھے ہوئے ، یہ پیساکہاں سے آتا ہے،
‏علیمہ باجی نے کروڑوں کا پیساوائٹ کرالیا، اور کہتا ہے فوج جانتی ہے کرپٹ نہیں ہوں،
‏مالم جبہ کیس کھلنے نہیں دیتا، کہتا ہے فوج جانتی ہے میں کرپٹ نہیں ہوں،
‏درخت کہاں لگے، کوئی نہیں جانتا، لیکن فوج جانتی ہے میں کرپٹ نہیں ہوں،
‏گندم، ایل این جی پر ڈاکا ڈالا، بلین ٹری کے درخت نجانے کہاں گئے؟
‏کروڑوں روپے لوٹنے والوں کو نیب سے بچایا، ملک سے فرار کرایا،
‏تم2لاکھ تنخواہ لیتے ہو اور 3 سو کنال کا محل چلاتے ہو،
‏فوج بھی اب بولےگی تم نےبڑی ایمانداری سےکرپشن کی ہے،

اب ‏مان گیا رانا ثناء اللہ پر جھوٹا کیس بنایا،کہتا ہے کابینہ نے بنادیا،
‏دوسرےصوبے کہتے تھے جب تک پنجاب کھڑا نہیں ہوگا تبدیلی نہیں آئےگی، آج پنجاب کھڑا ہے “

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان صاحب فرما رہے تھے،

‏ ‏پی ڈی ایم کی عظیم الشان ریلی میں ہرطرف سےلوگوں نےشرکت کی، ‏ریلی کے شرکاء نے حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کیا،‏پی ڈی ایم آزاد جمہوری ہواؤں کی جدوجہد کررہی ہے، ‏پی ڈی ایم کی تحریک جمہوری تحریک ہے،
‏پی ڈی ایم کےاجلاس کےوقت یہ اتحاد ٹوٹنے کا انتظار کررہے تھے، ‏عوام کے نمایندے وہی ہیں جو پی ڈی ایم پلیٹ فارم پر جمع ہیں،
اس ‏ناجائز اور غیر جمہوری حکومت نےمعیشت تباہ کردی ہے،
‏عمران خان نے کہا تھا مودی کامیاب ہوا تو کشمیر کا مسئلہ حل ہوجائیگا، ‏کشمیر کو 3 حصوں میں تقسیم کرنےکافارمولا عمران خان نےپیش کیاتھا، ‏یہ کشمیر فروش ہیں، 5 فروری کو کشمیریوں سے یکجہتی کا دن منائیں گے،
‏ناکام پالیسی کے نتیجےمیں کشمیریوں کومودی کےظلم و ستم پرچھوڑ دیا ہے،
‏ملک میں سی پیک کا وہی حال ہےجو پشاور میں بی آر ٹی کاہے، ‏افغانستان اور ایران کی معیشت اوپر جارہی ہے،
‏ہندوستان، بنگلا دیش، ملائیشیا، انڈونیشیا کی معیشت اوپر جارہی ہے، ‏پاکستان کی معیشت ڈوب رہی ہے،
فارن فنڈنگ میں سب سے زیادہ پیسہ اسرائیل سے آیا ہے اور فارن فنڈنگ کیس کو الیکشن کمیشن کیوں موخر کررہا ہے، 19 جنوری کو الیکش کمیشن کے سامنے مظاہرہ کرینگے
‏یہ ملک عوام کا ہے اور عوام کا راج ہوگا، ‏پی ڈی ایم میں سیاسی بالغ لوگ ہیں،تم بیساکھی پر چلنے والے ہو، تمہیں چلنا بھی نہیں آیا،‏ہمارا موقف اصول پر ہے، ہم نےاصول کی بات کی ہے، ‏کبھی ہم کارڈ دکھائیں گے،کبھی چھپائیں گے،تم جلتےرہو گے، جو ہمارے آئین اور دستور کو تسلیم نہیں کرتے ہم انہیں نہیں مانتے”