raja-irfan-abbasi 13

چیئرمین ہوٹل ایسوسی ایشن مری رجسٹرڈ راجہ عرفان عباسی نے اپنے بیان

مری معروف سیاسی،سماجی وکاروباری شخصیت چیئرمین ہوٹل ایسوسی ایشن مری رجسٹرڈ راجہ عرفان عباسی نے اپنے بیان میں کہاہے کہ کوروناوائرس کو آئے ہوئے اورمری میں لاک ڈاؤن کو تقریباً ساڑھے تین ماہ سے زائد کاعررصہ ہوگیاہے جبکہ مری سمیت دیگر سیاحتی مقامات کو بہت پہلے سے بندکردیاگیا تھا انہوں نے کہا کہ یہ بات بھی سمجھ سے بالاتراورحیران کن ہے کہ صبح 8 بجے سے لیکر شام 7 بجے تک کورونا نہیں ہوتا شام ڈھلتے ہی کورونا وائرس آجاتا ہے جبکہ منڈیوں میں کورونا جاتا ہی نہیں سرکاری اور پرائیویٹ ہسپتالوں توسرے سے کورونا وائرس آتا ہی نہیں،مری اور دیگر شہروں میں آٹے کے ٹرک کو خالی کرنے میں مزدور ایک دوسرے کے انتہائی نزدیک ہوتے ہیں اور کوروناوائرس خاموش رہتا ہے ان مزدوروں کوکچھ نہیں ہوتا لیکن اب سمجھ آرہی ہے کہ کورونا بھی میر آدمیوں کیلئے آیا ہے جبکہ غریب اورمزدوروں کو کورونا وائرس کچھ نہیں کہتا اب عوام جاننا چاہتے ہیں کہ کورونا وائرس کو وطن پاک میں کون ڈیل کررہا ہے اور صبح 8 بجے سے شام 7 بجے تک اورمنڈیوں میں کوروناجاتا ہی نہیں کورونا کی بھاگ ڈور کس کے ہاتھ میں ہے خداراہ پاکستان کے عوام سے مذاق چھوڑ دیں کیونکہ کیاپہلے بیروزگاری کم تھی کہ مزید لوگوں کو بیروزگاری کے اندھیروں میں جھونک رہے ہیں،راجہ عرفان عباسی کا سوال ہے کہ کیا اس وقت کا انتظار کیاجارہا ہے کہ عوام مجبور ہوکر چور اور ڈاکو ن جائیں خداراہ ملک کو پاک رہنے دیں اورسنجیدہ ہوکر بہترین فیصلے کریں اسی میں سب کی بھلائی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں