37

کوہسار یونیورسٹی کا ایکٹ پنجاب اسمبلی سے پاس

**کوہسار یونیورسٹی کا ایکٹ پنجاب اسمبلی سے پاس

 پنجاب اسمبلی نے آج کوہسار یونیورسٹی کا ایکٹ پاس کرکے اس ادارے کے قیام کی بنیاد رکھ دی۔

۔کرونا وباء کی وجہ سے یہ سلسلہ معطل ہو گیا تھا اور اسمبلی سے یونیورسٹی ایکٹ پاس کئے بغیر گراوئنڈ پر کام شروع نہیں کیا جا سکتا تھا۔

۔میں وزیر اعلٰی عثمان بذدار صاحب اور وزیر ہائیر ایجوکیشن راجہ یاسر سرفراز کا اس مہربانی پر انتہائی مشکور ہوں۔ اور اپنے ساتھی ایم پی ایز کی کوششوں پر بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔

۔یونیورسٹی ایکٹ کی منظوری وہ آخری دستاویزی اور پروسیجرل روکاوٹ تھی جسکے ختم ہونے پر اب باقی کام میں تیزی انشاءاللہ آجائیگی۔

۔اس ایکٹ کو اس سال جنوری کے اسمبلی سیشن میں ایجنڈہ پر رکھا گیا تھا مگر بد قسمتی سے اسکی باری نہ آسکی اور سیشن ختم ہو گیا ۔ بعد ازان کورنا وباء کے بعد اسمبلی سیشن نہ ہوئے اور ہیلتھ ایمرایجنسی کی طرح کی حالت رہی۔

۔کورونا وباء کی غیر یقینی صورتحال میں جس بیوروکریٹ سے بات کی انکی طرف سے جواب ملا کہ کرونا کی وجہ سے چلتے ہوئے سب تعلیمی ادارے بند ہوگئے ہیں اور ایسے میں کسی نئے ادارے کی بنیاد پر کام کرنا تقریباً ناممکن بات ہوچکی تھی۔

۔ 2019-20 کے صوبائی بجٹ میں اس یونیورسٹی کے لئے فنڈز رکھے گئے تھے مگر قانون سازی نہ ہونے پر کام شروع نہ ہو سکا اور بعد میں کرونا وباء کی وجہ سے دفاتر اور تعلیمی ادارے بند ہو گئے تو ایسے تمام منصوبے رک گئے۔ موجودہ بجٹ میں بھی یونیورسٹی کیلئے 50 ملین روپے فنڈنگ مہیا کردی گئی ہے۔

۔انشاءاللہ کرونا ایمراجنسی میں جونہی آسانی پیدا ہوئی یونیورسٹی کا رُکا ہوا کام وہیں سے شروع ہو جائیگا ۔

۔یونیورسٹی کے آغاز کے فوراً بعد کہوٹہ اور کلر سیداں کے درمیانی علاقے میں اس یونیورسٹی کا سب کیمپس قائم کرنے کا بھرپور ارادہ ہے جو انشاءاللہ اسی Tenure میں پورا کرنے کی کوشش کرونگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں