awara-dog 19

آوارہ کتوں اور اورچوہوں کی بھر مار

مری شہر بھر ایک تومیں سٹریٹ لائٹس نہ ہونے سے عوام اورنمازی بھی پریشان ہیں دوسری طرف مری اورمضافات میں آوارہ کتوں اورچوہوں کی بھر مار شہر کی گلیوں،محلہ اور بازاروں میں درجنوں آوارہ کتے ٹولیوں کی شکل میں گھومتے نظرآتے ہیں جبکہ محلوں،بازاروں میں سینکڑوں کی تعداد میں چوہے بلاجھجک دوڑتے پھرتے نظرتے ہیں نمازیوں کا کہنا ہے کہ فجر اور عشاء کی نمازکی ادائیگی کیلئے مساجد میں جانے میں انکو شدید مشکلات کا سامنا ہے درجنوں کتے گلیوں میں کھڑے ہوتے ہیں اوراندھیرے میں خطرہ ہوتا ہے کہ کسی کو کاٹ نہ لیں ایسی صورتحال میں ان کی نمازیں بھی قضاہوجاتی ہیں،اس سے قبل بھی آوارہ کتے کئی انسانوں کوزخمی کرچکے ہیں جبکہ غریب لوگوں کے پالتوجانور بھی ہلاک کرچکے ہیں عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ جہاں حکومت،تحصیل انتظامیہ اور ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کوروناوائرس اور ڈینگی سے نمٹنے میں مصروف ہیں ایسے میں عوام کو ان آوارہ کتوں سے بچانا بھی ان کے فرائض میں شامل ہے جبکہ چوہوں کی بڑھتی ہوئی تعداد بھی تاعون پھیلنے کا سبب بن سکتی ہے عوامی حلقوں اورشہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ وقت ضائع کئے بغیر تحصیل انتظامیہ،محکمہ صحت مری،راولپنڈی ویسٹ مینجمنٹ اور البائراک کمپنی کے ذمہ داران کتوں اور چوہوں کو تلف کرنے کی مہم شروع کریں شہر میں سٹریٹ لائٹس کے نظام کو بحال کریں تاکہ عوام جو پہلے سے ہی کورونا وائرس کے باعث شدید مشکلات سے دوچار ہیں کئی کسی دوسری مصیبت میں نہ پڑجائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں