97

مری سندھیاں میں فائرنگ سے زخمی ہونے والا نوجوان عاقل ظہور عباسی چل بسا۔ لواحقین کا لاش کلڈنہ چوک میں رکھ کرشدید احتجاج

مری
گذشتہ دنوں یونین کونسل دریا گلی کے علاقہ سندھیاں میں فائرنگ سے زخمی ہونے والا نوجوان عاقل ظہور عباسی چل بسا۔ لواحقین کا لاش کلڈنہ چوک میں رکھ کرشدید احتجاج۔ جس کے بعث چاروں اطراف گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگی احتجاج کی اطلاع ملتے ہی اے ایس پی مری وقاص خان کلڈنہ چوک پہنچ گے اور عاقل عباسی کے لواحقین سے طویل مذاکرات کے بعد کلڈنہ چوک کو ٹریفک کے لئے کھول دیا گیا تفصیلات کے مطابق مری کی یونین کونسل دریا گلی کے علاقہ سندھیاں میں تلخ کلامی پر جمال نامی نواجوان نے فائرنگ کر کے چار افراد کو شدید زخمی کردیا تھا جن کو تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال مری اور راولپنڈی شفٹ کردیا گیا جہاں پر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے عاقل والد ظہور ہفتے کے دن ہسپتال میں دم توڑ گیا جس پر لواحقین نے لاش تھانہ مری سے متصل کلڈنہ چوک میں رکھ کر قاتلوں کی گرفتاری اور مخالفین کی طرف سے فرج ایف آئی آر کو جھوٹی قرار دینے کراس ایف آئی آر درج نہ کرنے مری بھر میں ناجائز اسلحہ رکھنے والوں کے خلاف کاروائی آور قاتلوں کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوۓ شدید احتجاج کے طور پر کلڈنہ چوک کو بند کردیا جو دو گھنٹے تک بند رہا احتجاج کی اطلاع پر اے ایس پی مری وقاص خان موقعہ پر پہنچے اور مقتول کے لواحقین سے مذاکرات شروع کیئے اور ایک پانچ رکنی کمیٹی کے ساتھ تھانہ مری میں مذاکرات کئے اور مقتول کے لواحقین کو ہرمکمن تعاون کی یقین دہانی کروائی کہ پولیس ملزمان کے خلاف سخت ایکشن کرنے سمیت ملزمان کو گرفتار کرۓ گی جس کے بعد مظاہرین نے 14 جون صبح دس بجے تک احتجاج ختم کر دیا بعد ازاں لواحقین لاش لے گئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں