20

ملکہ کوہسار مری میں گراں فروشوں نے من مانے ریٹ وصول کرنے لگے مری انتظامیہ خاموش تماشائی

ملکہ کوہسار مری میں گراں فروشوں نے من مانے ریٹ وصول کرنے لگے مری انتظامیہ خاموش تماشائی ،ماہ صیام کے پہلے عشرے میں گراں فروشوں کی جانب سے مہنگائی اپنے عروج پر کھجور ،سیب کیلا تربوز مالٹا آلو پیار ٹماٹر اور دیگر سبزیاں پھلوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگیں گی مری میں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔کریانہ سٹور ،میڈیکل سٹور سبزی فروٹ والی شاپ اور دودھ دینے والی دکانیں کھلی ہے لاک ڈاؤن کے باعث کاروبار بند ہے داڑھی دار غریب اور بے سہارا لوگ افطاری کے لئے کچھ خرید نہیں سکتے جس کے باعث لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے سبزی فروٹ کی دکانوں پر ریٹ لسٹ تو آویزاں کردی گئی ہے لیکن چیزیں ان سے دگنے ریٹ پر و فروخت کی جا رہے ہیں موجودہ حکومت عوام کو ریلیف دینے کے لیے بالکل ناکام ماہ رمضان میں عوام کو ریلیف دینے کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے وزیراعظم عمران خان ، وزیر اعلی پنجاب عثمان بزار اور کمشنر راولپنڈی سے اپیل کی ہے مری میں اسسٹنٹ کمشنر مری ایک ذمہ دار آفیسر کو تعینات کیا جائے جوکہ عوام کو رلیف دینے کے لیے کام کرسکے موجودہ اسسٹنٹ کمشنر مری عوامی مسائل کو حل کرنے کے لیے بری طرح ناکام ہے مری کے عوام مہنگی اشیائے خوردونوش خریدنے پر مجبور ہیں تو دوسری جانب رمضان کے روزے رکھنے کے لیے سیاحوں نے ملکہ کوہسار مری کا رخ کیا ہوا ہے مری شہر اور اس کے گردونواح میں کرائے پر فلیٹ لے کر رہے ہیں جس کے باعث کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشات بڑھ گئے مساجد میں نماز تراویح اور دیگر نمازوں کی ادائیگی حوالے سے حفاظتی اقدامات کر دیے گئے ہیں لیکن سیروتفریح کے لئے آنے والے سیاحوں اور کرائے پر دینے والے فلیٹوں کے خلاف کوئی ہدایات نہیں جاری کیا گیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں