Press confrince murree 55

مری لاک ڈاؤن نے ہوٹل انڈسٹری سے وابستہ7 لاکھ 50 ہزار سے زائد لوگوں کو بیروزگار کردیا

مری کے لاک ڈاؤن نے ہوٹل انڈسٹری سے وابستہ7 لاکھ 50 ہزار سے زائد لوگوں کو بیروزگار کردیا یہ لاکھوں لوگ ہوٹل انڈسٹری سے اپنا رزق کماکر اپنے خاندانوں پالتے تھے مری میں 18 مارچ سے لاک ڈاؤن شروع کیاگیا تھا جس کا سلسلہ تاحال جاری ہے اور لاکھوں افراد جو مری کی اکلوتی ہوٹل انڈسٹری سے وابستہ ہیں بے روزگار ہوچکے ہیں اور ان کے خاندان فاقوں پر مجبور ہیں مری کی معیشت کا تمام تر دارومدارسیاحت اور ہوٹل انڈسٹری پر ہے وزیر اعلیٰ پنجاب مری اور ہوٹل انڈسٹری کیلئے فوری ریلیف پیکج دیں مری کو گیس،پانی،بجلی کے بلوں اور دیگر ٹیکسوں سے مستثنیٰ کرنے کے احکامات جاری کریں کورونا وائرس اللہ پاک کاعذاب ہے تمام لوگ اللہ پاک سے توبہ استغفار کریں اور پانچ وقت کی نمازیں باقاعدگی سے اداکریں آج دنیا کی سپر طاقتوں کو پتہ چل گیا ہے کہ سپر طاقت صرف اللہ پاک کی ذات ہی ہے ان خیالات کا اظہار ہوٹل ایسوسی ایشن مری رجسٹرڈ کے صدر حافظ جاوید اختر عباسی،جنر ل سیکرٹری ہوٹل ایسوسی ایشن مری رجسٹرڈ راجہ یاسر ریاست عباسی،مرکزی انجمن تاجران مری کے صدر راجہ طفیل اخلاق،مری سٹیزن فورم کے صدر ندیم اخلاص عباسی،جنرل سیکرٹری راجہ مسعود آصٖف عباسی،سابق نائب ناظم مری سٹی مرزا سہیل بیگ نے مری پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے دی گئی ہدایات اور حفاظتی تدابیرپر مکمل عمل پیرا ہیں انہوں نے مطالبہ کیا کہ مری سے لاک ڈاؤن کو ختم کیا جائے مری کے تمام داخلی راستوں پر واک تھروگیٹس لگائے جائیں اور سکریننگ کی جائے ہم اپنے ہوٹلوں اور دوکانوں میں بھی تمام حفاظتی تدابیر اختیار کرینگے اور کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو ہر صورت روکنے میں اپنا بھرپور کردا راداکرینگے،ان کا کہنا تھا کہ مری سب سے پہلے لاک ڈاؤن کیاگیا اور ہم نے حکومت کے ساتھ مکمل تعاون کیا تاکہ اس موذی کورونا وائرس کو روکاجاسکے انہوں نے کہا کہ 18 مارچ سے آج تک ہمارالاک ڈاؤن جاری ہے ہوٹل انڈسٹری،سے وابستہ لوگ،ٹیکسی ڈرائیورز،ہوٹل گائیڈز،ریڑھی بان اور دیہاڑی دار تمام لوگ فاقہ کشی پر مجبور ہیں ایسی صورتحال اب برداشت سے باہر ہے ہم 30 اپریل کے بعد اس لاک ڈاؤن پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے ہم لوگوں کو بھوکا مرتا نہیں دیکھ سکتے عوام کی حالت انتہائی تشویشناک حد تک خراب ہوچکی ہے،انہوں نے سترہ میل ٹول پلازہ پر مری کے مقامی لوگوں کو تنگ کئے جانے پر گہری تشویش کا اظہارکرتے ہوئے اس کو فوری روکنے کامطالبہ بھی کیا انہوں نے حکومت اور مری کے منتخب نمائندوں سے کہا کہ وہ جی ٹی روڈ اور ایکسپریس وے ٹول پلازہ کو مری کے عوام کیلئے فری کروائیں،راجہ طفیل اخلاق نے کہاکہ جو مالکان دوکانداروں سے دوکانیں خالی کروانا چاہتے ہیں ہم اسکی اجازت ہرگز نہیں دینگے جبکہ مری کینٹ کی مارکیٹیں اور بازار بھی مکمل بند ہیں،میونسپل کمیٹی کے کرایہ دار تاجر انتہائی مشکلات اور بے بسی کاشکار ہیں انہوں نے جی او سی مری اور اے سی مری سے اپیل کی کہ ان تاجروں کورواں سال کے کرایوں میں خصوصی رعائت دی جائے، مذکورہ رہنماؤں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے فوری طور پر مری کی ہوٹل انڈسٹری اور عوام کیلئے ریلیف پیکج دینے کی استدعا کی کہ بجلی،گیس کے بلوں اور دیگر ٹیکسوں سے مری کی ہوٹل انڈسٹری اور دیگر کاروباری حلقوں کو مستثنیٰ قراردیاجائے تاکہ اس مشکل وقت میں عوام اور کاروباری حلقوں کو کچھ تو ریلیف مل سکے،پریس کانفرنس میں سول سوسائٹی کے لوگوں کے علاوہ مرکزی انجمن تاجران مری کے سینئر نائب صدر واجد عباسی،لیبر ونگ ن مری کے صدر غالب بشیر عباسی،یوسف ہارون عباسی اور دیگر بھی موجود تھے پریس کانفرنس کے اختتام پرملک،امت مسلمہ،کی سلامتی اور کوروناوائرس سے پوری انسانیت کو محفوظ رکھنے کی دعابھی کی گئی اس موقع پرحکومتی ہدایات پر مکمل عملدرآمد کیاگیا تمام شرکاء نے فیس ماسک پہن رکھے تھے اور سب کے درمیان ضروری فاصلہ بھی رکھا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں