مہنگائی 57

ملکہ کوہسار مری مہنگائی کا جن بے قابو سیاحوں اور مقامی افراد مہنگی اشیاء خریدنے پر مجبور مری انتظامیہ بے بس

مری مہنگائی نے غریبوں کی کمر توڑ کررکھ دی 15 کلو آٹے کا تھیلہ 790 روپے کا ہوگیا جبکہ روٹی بھی اب دس روپے میں فروخت ہورہی ہے دیگر اشیاء ضروریہ بھی غریب عوام کی پہنچ سے دور ہوچکی ہے لیکن نہ تو حکومت اس سلسلے میں کچھ کررہی ہے اور تحصیل انتظامیہ مری بھی خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے لیکن عوام کی زندگیاں عذاب بن چکی ہیں دو وقت کی روٹی کھانا بھی مشکل ہوگیا ہے تحریک انصاف کی حکومت عوام کو ریلیف دینے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے عوام پر مہنگائی کا طوفان مسلط کرنے کا سلسلہ جاری ہے بجلی کے بلوں ،گیس کے بلوں میں بھی ہوشربا اضافے سے مری کے عوام اس شدید سردی میں گیس اور بجلی کی سہولت سے بھی پوری طرح مستفید نہیں ہوسکتے بھاری بھرکم بلوں نے عوام کی چیخیں نکا ل دی ہیں ،عوامی حلقوں کاکہنا ہے کہ اگر تحریک انصاف کی تبدیلی کا یہ ہی نعرہ تھا توایسی تبدیلی ہمیں منظور نہیں ہے عوامی حلقوں نے فوری طور پر مہنگائی پر کنٹرول کرنے اور تحصیل انتظامیہ مری کونیند سے جگانے کا مطالبہ کیا مہنگائی کے جن کو قابو کیا جائے تاکہ غریب عوام کو ریلیف مل سکے مری میں ایسی انتظامیہ لگائی جائے جو کہ منافع خوروں کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کی جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں