cpo-pindi 98

ملکہ کوہسار مری میں قانون پسند یہاں کے ”میزبانوں“ اور باہر سے آنے والے سیاح”مہمانوں“ کی مشترکہ ذمہ داری ہے

راولپنڈی:سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانانے کہا ہے کہ ملکہ کوہسار مری میں قانون پسند یہاں کے ”میزبانوں“ اور باہر سے آنے والے سیاح”مہمانوں“ کی مشترکہ ذمہ داری ہے،قانون شکنی کوئی بھی کرے قانون تو حرکت میں آئے گا،جہاں پر پولیس کی ذمہ داری ہے کہ وہ قانون کی عمل داری کو یقینی بنائے وہاں پر مری کے ہر طبقہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ تحمل اور برداشت سے سیاحوں کے ساتھ پیش آئیں یہ مثبت رویہ ان کے کاروبار اور معیشت کے استحکام کا باعث بنے گا،ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملکہ کوہسار مری میں امن و مان کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے بلائے گئے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،سی پی او نے کہا کہ مری کے قیام امن کے لئے جو غیر معمولی انتظامات کئے گئے ہیں ان کی بدولت مری میں آنے والے سیاحوں کی شکایات میں کمی واقع ہوئی ہے ان شکایات کو سو فیصد ختم کرنے کے لئے خصوصی فورس تعینات کی جا رہی ہے،انہوں نے کہا کہ سیاحوں کی مری میں آمد ہی یہاں کی رونقوں کے تسلسل کی ضمات ہے جو یہاں کاروباری حلقوں کے لئے بھی ناگزیر ہے،سی پی او نے کہا کہ ایس پی صدر روزانہ کی بنیاد پر ملکہ کوہسار مری میں امن و امان کے حوالے سے نافذ پلان سے متعلق مجھے آگاہ کریں گے،انہوں نے کہا کہ مری میں جس نوعیت کی قانون شکنی ہو اس پر قانون کو فوری حرکت میں آ کر قانون شکنوں کو گرفتار کر کے قانون کے شکنجے میں کسنا ہو گا،سی پی او نے کہا کہ مری میں جو نئی فورس تعینات کی جا رہی ہے وہ نہ صرف یہاں پر عوام کے جان ومال کی محافظ ہو گی بلکہ وہ سیاحوں کی راہنما بھی ہو گی جو سیاحوں کو راستے بتانے سمیت ہر قسم کی راہنمائی دے گی،سی پی او نے کہا کہ خدا نخواستہ اگر مری میں چھوٹی سی قانون شکنی کا وقوعہ بھی رونما ہو تو اس پر ایس پی موقع پر جا کر فوری کارروائی کرے گا۔