Construction murree 61

مری سابقہ دور میں تعمیرات پر لگائی گئیں پابندیوں کیخلاف عوام سراپااحتجاج

مری سابقہ دور میں تعمیرات پر لگائی گئیں پابندیوں کیخلاف عوام سراپااحتجاج ہیں ،تبدیلی سرکار نے بھی ان پابندیوں کیخلاف تاحال کوئی عملی اقدامات نہیں کئے عوامی،کاروباری اور سیاحتی حلقوں نے کہا کہ تعمیرات پر پابندی انسانی حقوق کی کی پامالی ہے میونسپل بائی لازاور قانون کے تحت تعمیرات کرنے کی اجازت ہونی چاہیے تاکہ ملکہ کوہسار کا حسن بھی برقرار رہے اور لوگوں اپنے گھر بھی قانون کے دائرے میں رہ کر تعمیر کرسکیں شہریوں کا کہنا ہے کہ اس پابندی سے جہاں قومی خزانے میں کروڑوں روپے نقشہ فیسوں کی مد میں جمع نہ ہونے بھاری نقصان پہنچ رہا ہے وہاں یہ رقوم ملازمین اور افسران کی جیبوں میں چلی جاتی ہیں جبکہ بااثر افراد نے قانون اوربائی لاز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے اور میونسپل کارپوریشن جو خود مالی مشکلات سے دوچار ہے کو یہ پیسہ وصول نہیں ہوتا بلکہ ملازمین اپنی جیبیں گرم کرکے بے ہنگم اور غیر قانونی تعمیرات کروارہے ہیں جس سے وطن عزیز کے اس اہم ترین سیاحتی مرکزکا حسن تاتارہورہا ہے ،عوامی ،سیاحتی ،سماجی اور کاروباری حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب ،چیف سیکرٹری پنجاب اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ غیر قانونی تعمیرات کرنے والوں کیخلاف قانون کے مطابق سخت کاروائی کی جائے اور عوام کو قانون اور بائی لاز کے تحت تعمیرات کرنے کی اجازت کرنے کی اجازت دیتے ہوئے پابندی کو فوری ختم کرنے مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں