52

مری میں ہونیوالے افسوسناک سانحہ پر فوری جوڈیشنل کمیشن بنایاجائے،جماعت اسلامی

مری میں ہونیوالے افسوسناک سانحہ پر فوری جوڈیشنل کمیشن بنایاجائے، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزداراس واقعہ کی ذمہ داری لیتے ہو ئے فوری مستعفیٰ ہو،محکمہ ہائی وے سیاحوں کے پھنسے ہوئے5 کلومیٹر علاقہ کی سڑکوں کوبروقت برف صاف نہ کرسکی،ذمہ داروں کیخلاف مقدمات درج کئے جائے انکوائری کمیٹی نے اگر ذمہ داروں کیخلاف لیت ولعل سے کام لیاتو ہم ہائیکورٹ سے رجوع کرینگے،حکومت نے غفلت کامظاہرہ کرکے 23 جانوں کوقتل کیا ہے ،حکومت پنجاب اوربیوروکریسی اس المناک واقعہ کے مرکزی ملزم ہیں،شدید برفباری کے دوران اگر فوج سے فوری مددلی جاتی تو کئی قیمتی جانوں کو بچایاجاسکتاتھاان خیالات کااظہار جماعت اسلامی کے مرکزی رہنماء سفیان احمدعباسی،جماعت اسلامی تحصیل مری کے امیرغلام احمدعباسی،جنرل سیکرٹری حافظ شکیل احمدعباسی،صدرالخدمت فاؤنڈیشن مری عطاء الرحمان عباسی،نائب امیرجماعت اسلامی حمادالمحمود عباسی،سجاد الحسن عباسی اورمسعود احمدبٹ نے مری میں پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت اور انتظامیہ کی لاپرواہی کے باعث قیمتی جانیں موت کے منہ میں چلی گئیں،سفیان عباسی نے کہا کہ ہم نے 6 جنوری 2022 کوآئندہ کے تین دنوں کے دوران متوقع شدیدطوفانی برفباری کی انتظامیہ کو تحریری اطلاع دی تھی تاکہ متعلقہ تمام ادارے اس ہنگامی صورتحال کیلئے تیاررہناچاہیے،اگر انتظامیہ ٹول پلازوں کی انتظامیہ کوہدایات جاری کرتی کہ برفباری کے دوران اتنی گاڑیوں کوداخل ہونے کی اجازت دی جائے جتنی مری میں گنجائش موجود ہے،خرابی موسم سے قبل واپڈا،ہائی وے،پولیس اوردیگر ادارے متحرک ہوہوتے مگرعین وقت پراورلوڈ ہونے کی وجہ سے حالات کوسنبھال نہیں پاسکے جو موثر منصوبہ بندی کانہ ہونا ہے،شاہراہیں بند ہونے سے جہاں سیاحوں تکلیف ہوئی وہاں مقامی لوگوں جن میں مریض،خواتین،بچے اوربزرگ لوگوں کو بھی مشکلات کاسامناکرناپڑا،الخدمت فاؤنڈیشن،فلاحی تنظیموں،اہلیان مری نے شدیدموسم میں برف میں پھنسے ہوئے سیاحوں کو نکالا،کلڈنہ میں پھنسے ہوئے سیاحوں کوگرم کمبل،سامان خوردونوش گرم ہیٹرا ور دیگر سہولیتیں دیکر اپنافرض اداکیا الخدمت فاؤنڈیشن نے بھرپورریسکیوکام کیا اوردختران اسلامی اکیڈمی بانسرہ گلی میں بھی سینکڑوں سیاحوں کو رہائشی سہولیتیں،ہیٹرزاورخوراک فراہم کی،مری کے شہریوں نے اپنی اسلامی اورمیزبانی کی روایات کو قائم رکھتے ہوئے انسان دوستی کاکرداراداکیا،رہنماؤں نے کہا کہ 72 گھنٹے بجلی کی بندش،ایندھن کی قلت، حکومت اورانتظامیہ کی ناقص کارکردگی کے باعث افسوسناک واقعہ رونما ہوا،اب حکومت پنجاب اورمنتخب نمائندوں نے اپنی ناقص کارکردگی اوراس سانحہ سے توجہ ہٹانے کیلئے مری کوضلع بنانے کااعلان کر رہے ہیں اسطرح عوام کو دھوکہ نہیں دیاجاسکتا،نیوایئرنائٹ کو بھی ناقص انتظامات اورنااہلی کے باعث پولیس نے سیاحوں پربہیمانہ لاٹھی چارج کیا،سانحہ مری پر ہم سب کے دل خون کے آنسور ورہے ہیں،مری میں ایک مکمل ضابطہ اخلاق مرتب کیاجانا انتہائی ضروری ہے،اورچارجنگ کرنے والوں کیخلاف بھی سخت کاروائی ہونی چاہیے لیکن خطہ کوہسار کے عوام کیخلاف غلط پروپیگنڈہ کی شدیدمذمت کرتے ہیں اس موقع پرجماعت اسلامی کے رہنماؤں،عبدالحلیم عباسی،جمال صفدرعباسی،نجیب عباسی کے علاوہ بڑی تعدادمیں تاجراورعوام کی بھاری تعدادموجودتھی۔

Print Friendly, PDF & Email