386

محکمہ ہیلتھ مری کی نااہلی کھل کر سامنے آگئی

مری وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے وژن صحت مند پنجاب کو عملی جامہ پہنانے کیلئے پنجاب فوڈ اتھارٹی مری بھی متحرک،محکمہ ہیلتھ مری کی نااہلی کھل کر سامنے آگئی۔متعدد ریسٹورنٹس۔فوڈ پوائنٹس۔معروف کافی شاپ۔اور کئی ملاوٹ شدہ دودھ فروخت کرنے والے بھی نرغے میں آگئے۔عرصہ سے مری میڈیا ملاوٹ شدہ دودھ کی سرعام فروخت کی خبریں شائع کر رہا تھا۔مگر نہ جانے محکمہ ہیلتھ کی ملی بھگت سے انسانی زندگیوں سے کھیلواڑ جاری تھا یا نا اہلی تھی؟ تفصیل کے مطابق ڈائریکٹر آپریشن نارتھ آمنہ رفیق کی ہدایت پر فوڈ ٹیمیوں نے سیاحوں اور مقامی لوگوں کو معیاری خوراک کی فراہمی کیلئے متحرک ہوئیں۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کے مطابق مال روڈ، ایکسپریس وے، لوئرٹوپہ، ڈنہ ایکسپریس وے، جھیکا گلی اور جی ٹی روڈ پر مختلف فوڈ پوائنٹس کا اچانک معائنہ کیا۔ حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزیوں پر 13 فوڈ یونٹس کیخلاف ایکشن لیا گیا ہے، غیر معیاری سٹوریج اور صفائی کے ناقص انتظامات پر 8 ریسٹورنٹس کو بھاری جرمانے عائد،رفاقت علی نسوآنہ کے مطابق زائد المعیاد اشیاء کی سٹوریج اور استعمال پر ایک معروف کافی شاپ کیخلاف کارروائی کی گئی ہے ملاوٹ ملا دودھ جسکی عرصہ سے عوامی شکایات پر محکمہ ہیلتھ مری کی نااہلی بھی کھل کر سامنے آئی۔اور فوڈ ٹیموں نے سٹوریج اور فروخت پر 3 ڈیری شاپس کیخلاف ایکشن لیا گیا ہے،:سیاحوں کو معیاری خوراک کی فراہمی کیلئے 18 فوڈ پوائنٹس کو سخت وارننگ دی گئی ہے، ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی نے کہا کہ سیاحتی مقامات پر کھانے پینے کی معیاری اشیاء کی فراہمی کیلئے فوڈ سیفٹی ٹیمیں ہر وقت کوشاں ہیں انہوں نے وارننگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ صحت دشمن عناصر کو کسی صورت کوئی رعایت نہیں دی جائے گی۔

Print Friendly, PDF & Email