Murree administration 77

مری انتظامیہ نے دھجیاں اڑ کر رکھ دیں

مری:سپریم کورٹ کی طرف سے بلدیاتی اداروں کی بحالی۔مری انتظامیہ نے دھجیاں اڑ کر رکھ دیں۔میونسپل کارپوریشن کی 3 اور ضلع کونسل کی 5یونین کونسلوں کے بلدیاتی نمائندگان کو جناح ھال اور اے سی آفس کا طواف کرواتے رہے۔جناح ھال کی چابی گلاس فور کا کے ملازم کے پاس ہے اور وہ آج موجود نہیں مری انتظامیہ کا عوام کے نمائندوں کو جواب۔جس کے بعد مری کی آٹھ یونین کونسلوں کے نمائندوں نے اسسٹنٹ کمشنرمری کے دفتر کے باہر ہی اپنی اپنی بھڑاس نکالی مری میں گزشتہ دن میونسپل کارپوریشن کی یونین کونسل دریا گلی کے چیئرمین اصغر عباسی اور ضلع کونسل کی یونین کونسل گہل کے چیئرمین عمر فاروق ستی کی قیادت میں مسیاڑی۔دریا گلی۔روات۔پھگواڑی۔علیوٹ۔سہر بگلہ۔انگوری۔گہل۔کے اکثریت بلدیاتی ممبران اجلاس منعقد کرنے کے لیئے تاریخی جناح ھال پہنچے تو وہاں پر ان کو جناح ھال بند ملا میونسپل کارپوریشن کے ذمہداران نے کہا کہ چابی اوپر اے سی دفتر میں ہے جہاں پر بلدیاتی نمائندگان پہنچے تو اے سی دفتر کے عملے نےواپس ان ممبران کو طواف میونسپل کارپوریشن کے دفتر کا کروایا کہ جناح ھال کی چابی نیچے ہے جس پر میونسپل کارپوریشن سے بلدیاتی نمائندگان کو کہا گیا کہ چابی گلاس فور کے ملازم کے پاس ہے اور وہ کہیں گیا ہوا ہے۔جس کے بعد ان یونین کونسلوں کے چیئرمین اور وائس چیئرمین۔کونسلرز جن میں اصغر عباسی۔عمر فاروق ستی۔حاجی خلیل۔راشد عباسی۔راجہ قذافی۔زکریا عباسی اور دیگر شامل تھے۔بلدیاتی نمائندگان نے طواف کاٹنے کے بعد کھلی فضا میں کھڑے ہو کر اپنے اپنے خطابات کیے بعض ممبران نے حلقہ کی قیادت اور انتظامیہ کو آڑے ہاتھوں لیا تو سٹیج سیکرٹری کے فرائض سر انجام دینےوالے یونین کونسل گہل کے چیئرمین عمرفاروق ستی الفاظ ایم این اے اور ایم پی اے کے حذف کرتے رہے۔