TDC 28

ٹی ڈی سی میں ڈبلیو ایچ او اوروزارت صحت کے تعاون سے ترک تمباکو نوشی کلینک قائم دی

مری:ٹی ڈی سی میں ڈبلیو ایچ او اوروزارت صحت کے تعاون سے ترک تمباکو نوشی کلینک قائم دی ڈائبٹیز سینٹر (ٹی ڈی سی) نے تمباکو کے استعمال کے خلاف ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن اور وزارت صحت حکومت پاکستان کے ساتھ مشترکہ کوششیں جاری رکھتے ہوئے29 مئی 2021 کوترک تمباکو نوشی کلینک قائم کیا،ٹی ڈی سی گزشتہ برس وزارت صحت اور ڈبلیو ایچ او کے تعاون سے تمباکو فری زون کا درجہ حاصل کر چکا تھاکلینک کا افتتاح ٹی ڈی سی میں منعقدہ ایک پر وقار تقریب میں کیا گیا پاکستان میں ڈبلیو ایچ او کی نمائندہ ڈاکٹر پیلتھا مہیپالا تقریب کی مہمان خصوصی تھیں جنہوں نے لوگوں کو تمباکو نوشی جیسے خطرناک رویوں میں ملوث ہونے سے روکنے کے لئے تمباکو نوشی زون سے متعلق قواعد و ضوابط پر عمل درآمد کرنے اور ترک تمباکو نوشی کلینک کے قیام کے لئے ٹی ڈی سی کی کوششوں کو سراہا انہوں نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او ٹی ڈی سی کے کلینک کو اپنی مدد فراہم کرتا رہے گا،دیگر مہمانوں میں ڈاکٹر منہاج سراج، پروجیکٹ ڈائریکٹرتمباکو نوشی فری کیپٹل پروجیکٹ، وزارت صحت، ڈاکٹر سمرہ مظہر، ڈپٹی ڈائریکٹر وزارت صحت شہزاد عالم خان، ڈبلیوایچ او کے نیشنل پروفیشنل برائے این سی ڈی اور تمباکو کنٹرول اور محمد آفتاب احمد، پروجیکٹ منیجر، تمباکو نوشی فری کیپٹل پروجیکٹ اور وزارت صحت، شامل تھے،ٹی ڈی سی کے سی ای او طاہر عباسی نے اس موقع پر کہاکہ ترک تمباکو نوشی کلینک تمباکو کے خاتمے کے لئے خدمات فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ تمباکو کے استعمال کے خطرات اور اس کی قوم کی معیشت اور ماحولیات پر پڑنے والے منفی اثرات کے بارے میں شعور پیدا کرنے کے لئے کام کرے گا،چیئرمین ٹی ڈی سی بورڈ آف ڈائریکٹرز ڈاکٹر اسجد حمید نے حاضرین کو بتایا کہ تمباکو نوشی کرنے والوں میں تمباکو استعمال نہ کرنے والوں کے مقابلے میں ٹائپ ٹو ذیابیطس ہونے کا امکان 30 سے 40 فیصد زیادہ ہے جبکہ تمباکو کے استعمال سے ذیابیطس اور اس سے متعلقہ پیچیدگیوں پر قابو پانا بھی مشکل ہوسکتا ہے کیونکہ نیکوٹین کی اعلی سطح انسولین کی تاثیر کو کم کرسکتی ہے،اس موقع پرٹی ڈی سی، ڈبلیو ایچ او اور وزارت صحت کے عہدہداران نے تمباکو کے استعمال سے متعلق بیماریوں کا بوجھ کم کرنے کے لئے مل کر کام جاری رکھنے کے عزم کا اظہار بھی کیا۔