Murree Hangam construction 43

مری ٹی ایم اے کے سرکاری ملازمین سرکار کی پیٹ میں ہی چھرا گھونپنے لگے

مری ٹی ایم اے کے سرکاری ملازمین سرکار کی پیٹ میں ہی چھرا گھونپنے لگے مری کے مختلف مقامات پر ٹی ایم اے کے ملازمین کی سرپرستی اور تخفظ کی بنیاد پر بے ہنگم تعمیرات بلند و بالا عمارتوں کو پروان چڑھایا جا رہاہے تفصیلات کے مطابق ملکہ کوہسارمری میں غیر قانونی اور بلند وبالا تعمیرات کا سلسلہ تاحال رک نہ سکا کشمیرپوائنٹ،ویوفورتھ روڈ،بنک روڈ،جھیکاگلی سمیت ہرطرف تعمیرات جاری ہیں بااثر تعمیراتی مافیاء کے آگے تحصیل انتظامیہ کی ملی بھگت سے مری شہر اورگردونواح میں بڑے پیمانے پر تعمیرات اور پہاڑوں کی کٹائی کاسلسلہ جاری ہے عیدالفطر کی چھٹیوں کے دوران کام بندتو نظر آرہا ہے لیکن ہیوی مشینری موقع پر موجود ہے اور تعطیلات کے فوراً پہاڑوں کی کٹائی اور تعمیرات کاسلسلہ پھر شروع ہوجائیگا اور وطن عزیز کے اس معروف اور اہم ترین پرفضاء سیاحتی مقام کی تباہی کاسلسلہ پھرشروع ہوجائیگا عوامی حلقوں کاکہنا ہے چند دنوں یا ہفتوں میں اتنے بڑے بڑے پہاڑوں کو کاٹ کر عمارات تعمیر نہیں ہوسکتی مری کی تباہی میں میونسپل کارپوریشن کے اہلکاروں،ذمہ داروں سمیت تمام سرکاری محکمے ملوث ہیں جبکہ گذشتہ دنوں وزیر اعظم نے ٹیلیفون پر شکایت پر فوری کاروائی کے احکامات جاری کئے تھے اس کے باوجود کوئی عملدرآمد ہوتانظر نہیں آرہا اگر اسی طرح مری کوتباہ کرنے کایہ سلسلہ جاری رہا تو مری مکمل طورپر کنکریٹ کا پہاڑ بن جائیگا اوریہاں کی سیاحت ختم ہونے سے یہاں کی معیشت پر بھی انتہائی منفی اثرات مرتب ہونگے انہوں نے وزیر اعظم عمران خان،وزیر اعلیٰ پنجاب،کمشنر،ڈپٹی کمشنر راولپنڈی،محکمہ ماحولیات کے اعلیٰ حکام اوردیگر سے مری کوبچانے کیلئے فوری ایکشن لینے کامطالبہ کیا ہے۔ اور کرپشن کرنے والے ان سرکاری ملازمین کو فل فور دوسرے شہروں کی تحصیلوں میں ٹرانسفر کیاجائے اور ان کی جگہ دوسری تحصیلوں سے ذمےدار فاران کو تعینات کیا جائے تاکہ مری کی خوبصورتی کو بچایا جا سکے،،