Construction 45

مری شہر کی اکثریت سڑکیں تعمیرات مافیا نے کھنڈرات میں بدل دیں

مری شہر کی اکثریت سڑکیں تعمیرات مافیا نے کھنڈرات میں بدل دیں۔بنک روڈ جیسی اہم سڑک کنارے مختلف مقامات پر کھدائی کرنے والوں نے مٹی اور پھتروں کے ڈھیر لگا رکھے ہیں۔مری میں تعینات تقریباً ہر محکمہ کے ذمہدار کی رہائش۔دفتر اور
دن میں کئی مرتبہ آمدورفت اس بنک روڈ سے ہوتی ہے۔شہریوں کی اکثریت مری میں بے ہنگم تعمیرات۔سڑکوں کی تبائی اور اداروں کی بے بسی پر میاں محمد شہباز شریف کی گورننس کو یاد کرنے لگے۔تحریک انصاف مری کے گڈ گورننس کے سربراہ راجہ خرم زمان کا ہوٹل بھی بنک روڈ پر واقع۔سپریم کورٹ۔ہائی کورٹ۔ہائی وۓ۔اے ایس پی آفس۔مری میں تعینات ججوں کی رہائش گائیں۔مختلف محکموں کے ریسٹ ہاوسز بھی اسی سڑک پر واقع ہیں۔ملکہ کوہسار مری اسوقت مکمل طور پر مافیا کے قبضہ میں ہے تحریک انصاف کی قیادت لورہ سے سب کچھ کنٹرول کر رہی ہے۔حالات دیکھ کر یوں محسوس ہوتا ہے کہ حلقہ این اے 57 اور پی پی 6 میں تحریک انصاف اپنا پہلا اور آخری میچ کھیل رہی ہے۔23 اپریل کو وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار وزیر اعظم کے سامنے ملکہ کوہسار کا قاعدہ پڑھ کر مافیا سے تالیاں مروا کر خوش آمدی کروا کر 62 کروڑ اور 83 کروڑ لینٹر فنڈ لیکر رخصت ہو گئے 23 اپریل کو وزیر اعظم اور وزیر اعلی کو مری کے حوالہ سے بلکل بے خبر رکھا گیا اور نظریاتی کارکنان کو اپنے قائد عمران خان سے دور رکھنے کی وجوہات بھی 62 کروڑ 83 کروڑ میں 21 کروڑ کا فرق تھاجو وزیر اعظم نے تصیح کروائی عوام کے مطابق وزیر اعظم نے حلقہ این اے 57 پی پی 6 سے سیلکیڈ ہونے والے ممبران کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے کہ جو مرضی کرو جتنا کما سکتے ہو کما لو لیکن وزارت مشارت کا سوچنا بھی نہیں جس پر سیلکیڈ ممبران نے حلقہ کی عزت سے کھیلواڑ جاری رکھا ہوا ہے