Roads ruins 30

مری کی تمام سیاحتی شاہراہیں کھنڈرات کامنظر پیش کررہی ہیں

مری:گرمائی سیزن کی آمد مری کی تمام سیاحتی شاہراہیں کھنڈرات کامنظر پیش کررہی ہیں محکمہ ہائی وے مری کی غفلت،لاپرواہی اور ناقص کارکردگی سڑکوں کی تعمیرومرمت کرنے کے بجائے مختلف علاقوں میں غیر ضروری دیواریں من پسند ٹھیکیداروں سے بنواکر اورکمیشن کھاکرسرکاری خزانے کو نقصان پہنچایاجارہا ہے،ناقص حکمت عملی اور نااہلی اور کرپشن کے باعث ملکہ کوہسار مری کی اہم ترین سیاحتی شاہراہیں کلڈنہ روڈ، ویوفورتھ روڈ،بنک روڈ،اپر جھیکاگلی روڈ،لوئر جھیکاگلی روڈ،کارٹ روڈ سمیت تمام اہم ترین شاہراہیں اورلنک روڈخستہ حال ہوچکے ہیں جس سے لاکھوں کی تعدادمیں مری آنے والے سیاحوں اور مقامی لوگوں کو شدید پریشانی کاسامنا ہے،کھنڈرات نما گڑھوں میں تبدیل ہوجانے والی سڑکوں پر جب سیاحوں اورمقامی لوگ گاڑیاں لاتے ہیں تو انکی گاڑیاں تباہ ہوجاتی ہیں،ممبر قومی اسمبلی اور ممبرصوبائی اسمبلی کی مری سے کوئی بھی دلچسپی نظر نہیں آتی جس کے باعث سرکاری محکمے بھی من مرضی کے کام کرتے ہیں اگر سڑکوں کی حالت ایسی ہی رہی تو اسکے مری کی سیاحت پر انتہائی منفی اثرات مرتب ہونگے،سیاحتی،کاروباری اور عوامی حلقوں نے کمشنر،ڈپٹی کمشنر راولپنڈی اورمحکمہ ہائی وے کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ فنڈزضائع کرنے کیلئے غیر ضروری دیواروں کی تعمیر کرنے والے محکمہ ہائی وے کے ذمہ داران کیخلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے اور مری کی سڑکوں کی فوری تعمیر ومرمت کی جائے تاکہ گرمائی سیزن میں سیاحوں اورمقامی لوگوں کو مشکلات کم ہوسکیں۔