Tree planting 59

مری موسم بہار میں شروع ہونے والی شجرکاری مہم کئی بھی نظر نہیں آرہی

مری:محکمہ جنگلات،محکمہ زراعت سمیت کسی بھی ادارے کی طرف سے موسم بہار میں شروع ہونے والی شجرکاری مہم کئی بھی نظر نہیں آرہی، وزیر اعظم عمران خان کے گرین اینڈ کلین پاکستان کے وژن کو ہوا میں اڑادیاگیا ہے ضرور ت تو اس امر کی ہے کہ بڑے پیمانے پر تحصیل مری میں بھرپور شجرکاری مہم شروع کی جاتی لیکن اسکے برعکس محکمہ جنگلات اورمحکمہ زراعت مری جن کی بنیادی ذمہ داری ہے کہ وہ شجرکاری مہم کو کامیاب کرنے کیلئے خصوصی پروگرام ترتیب دیتے اور عوام میں شعور پیداکرنے کے ساتھ ساتھ پھلدار اوردیگر پودے عوام کو فراہم کئے جاتے لیکن اسکے بجائے صرف اگر کوئی وی وی آئی پی آئے تو دکھاوے کیلئے پودالگواکر محکموں کے افسران اپنی جان چھڑالیتے ہیں،ملکہ کوہسارمری کی دلکشی اور سیاحت کادارومدار یہاں کے حسین جنگلات سے ہے مگرمذکورہ محکمے درخت لگانے اور جنگلات کی فزائش کرنے کے بجائے انکو تباہ کرنے میں پوری طرح ملوث دکھائی دیتے ہیں مری میں ہونے والی تعمیرات سے بڑے پیمانے پر کھدائی کے بعد مٹی محکمہ کی ملی بھگت سے جنگلات میں پھینک دی جاتی ہے جس سے نہ صرف چھوٹے چھوٹے خودرو پودے تباہ ہوجاتے ہیں وہاں کئی علاقوں میں لینڈسلائیڈنگ کے خطرات بھی زیادہ ہوگئے ہیں اگر صورتحال یہی رہی تو مری کے سرسبز قیمتی جنگلات تباہ ہوجائینگے جس کے مری کی سیاحت اورروزگارپر بھی انتہائی منفی اثرات مرتب ہونگے عوامی حلقوں نے وزیر اعظم عمران خان،وزیر جنگلات پنجاب،کمشنر،ڈپٹی کمشنر راولپنڈی اور دیگر اعلیٰ حکام سے متعلقہ محکموں کی غفلت اورلاپرواہی پر فوری سخت نوٹس لینے اورشجرکاری مہم کو بھرپور طریقے سے شروع کرنے کامطالبہ کیا ہے۔