Tourist places 58

مری میں تمام سیاحتی مقامات پر قائم سٹال سیاحوں کو لوٹنے لگے

ملکہ کوہسار مری میں تمام سیاحتی مقامات پر قائم سٹال سیاحوں کو لوٹنے لگے کھانے پینے والی چیزوں پر ریٹ لکھے ہونے کے باوجود سیاحوں سے سو فیصد زائد پیسے وصول کرنے لگے سیاحوں نے مری اسسٹنٹ کمشنر مری سے نوٹس لینے کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق مری میں مہنگائی پورے اپنے عروج پر ہیں دوسری جانب مری میں سیاحتی مقامات پر قائم سٹال اور کیبن والوں سیاحوں لوٹ مار کا بازار گرم جوس چپس کے ریپر قیمت پر موجود قیمت سے زائد کی قیمتیں مہمانوں سے وصول کرنے لگے مثال کے طور پر ڈبہ جوس کا پچاس روپے ہے تو سیاحوں کو 60 روپے ادا کرنے پڑیں گے اسی طرح دیگر چیزوں کے بھی ریٹ اپنے من مانے ریٹ پر فروخت کرنے لگے جس سے ملکہ کوہسار مری کے سیاحت پر منفی اثرات پیدا ہونے لگے اسی طرح مال روڈ پر گھوم پھر کر چیزیں بیچنے والے مہمانوں کو گمراہ کرنے لگے مرحبا چوک سے جی پی او تک افغانی بچوں سمیت سیو کو زبردستی چیزیں دینے کی کوشش کرتے ہیں اگر کوئی ان چیزوں کو خریدنے پر راضی ہوجاتا ہے دگنے ریٹ فروخت کرتے ہیں اگر ان سے چیز نہ لیں ان کو بلیک میل کرتے ہیں بددعائیں اور نازیبا الفاظ کا استعمال کیا جاتا ہے سیر و تفریح کے لیے آنے والے سیاحوں نے اسسٹنٹ کمشنر مری اور ڈی سی راولپنڈی سے سخت نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ،،،،