Murree water shortage 33

ملکہ کوہسار مری میں پانی کا بحران شدت اختیار کرگیا، انتظامیہ بری طرح ناکام

مری: کشمیرپوائنٹ مری سے گذشتہ کئی دنوں سے شہریوں،ہوٹلوں اور ریسٹورنٹس کو پانی کی سپلائی بند ہونے سے کاروباری حلقے اور گھریلو صارفین شدید مشکلات سے دوچار ہیں جبکہ مساجد میں بھی پانی نہ ہونے سے نمازیوں کو شدید پریشانی کاسامنا ہے، ان دنوں ملک اوربیرون ممالک سے بڑی تعداد میں سیاح مری پہنچے ہوئے ہیں جبکہ مزید لوگوں کی آمد کا سلسلہ جاری ہے ایسے میں پانی کی شدید قلت سے جہاں مقامی لوگوں کو شدید مشکلات کاسامنا ہے وہاں ہوٹل وریسٹورنٹس مالکان اوردیگر کاروباری حلقے بھی پانی کی عدم فراہمی کے باعث بہت مشکل میں ہیں اوربھاری رقم خرچ کرکے پرائیویٹ ٹینکروں کے ذریعے پانی لینے پر مجبور ہیں جبکہ عوام پانی کی بوند بوند کوترس رہے ہیں اور مری شہر کربلا کامنظر پیش کررہا ہے پانی کے اس مصنوعی بحران کیخلاف ہوٹل وریسٹورنٹس مالکان کا شدید احتجاج کرتے ہوئے فوری طور پر پانی سپلائی کرنے کامطالبہ لیکن متعلقہ ذمہ داران،تحصیل انتظامیہ،پبلک ہیلتھ اورمحکمہ واٹر سپلائی کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی،مری آنے والے سیاح بھی پانی کے بحران کے باعث جھیکاگلی بازار اور دیگر داخلی راستوں سے واپس جانے لگے ہیں اگر پانی کے اس مسئلے کو فوری طور پر حل نہ کیاگیا تو مری کی سیاحت پر اسکے انتہائی منفی اثرات مرتب ہونگے،عوامی،سیاحتی،کاروباری حلقوں اور گھریلو صارفین نے کمشنر،ڈپٹی کمشنر راولپنڈی اور دیگر اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے،اصلاح احوال کرنے اور ذمہ داران کیخلاف سخت قانونی اورمحکمانہ کاروائی کرنے کامطالبہ کیا ہے۔