Eating inside a restaurant 32

مری مال روڈ پر فحاشہ عورتوں کا راج سرِ عام دعوتِ گناہ دینے

مری مال روڈ پر فحاشہ عورتوں کا راج سرِ عام دعوتِ گناہ دینے لگی مری پولیس کی نااہلی کی وجہ سے جسم فروشی کا دھندہ عروج پرجن لوگوں نے ان عورتوں کو ہوٹل اور فلیٹ کرایے پر دے رکھے وہ مری کی بدنامی میں برابر کے شریک ہیں ہوٹل مالکان اور فلیٹ مالکان جسم فروشی کا دھندہ کرنے والی کرپٹ عورتوں سے فوری طور پر ہوٹل اور مکان خالی کروالیں ایسے لوگوں کو ہوٹل اور فلیٹ کرایے پر نہ دیں مری پولیس مال روڈ پر ان سرعام دعوت گناہ دینے والی کرپٹ اورفحاشی پھیلنے والی عورتوں کے خلاف فل فور قانونی کاروائی کرئے کیونکہ اندرون ملک اور بیرونِ ملک سے سیاح سیر سیاحت کے مری آتے میں لیکن مری مال روڈ پر ان فحاشہ عورتوں کی وجی شریف گھرانوں کے باکردار لوگوں کا مری مال روڈ پر گھومنا پھیرنا محال ہو کر رہ گیا ہے مختلف شہروں جن لاہور فصیل آباد ملتان سے آنے والی کچھ فحاشہ ا عورتیں جو جسم فروشء کا دھندہ کرتی ہیں نے گزشتہ ایک سال سے مری مال روڈ پر ڈیرہ ڈال رکھا جو مری میں کے مختلف ہوٹلوں اور فلیٹس میں رہائش اختیار پذیرہیں جن کا کام سر عام دعوتِ گناہ دے کر پیسے کمانا ہے جسکی وجہ سے مری کی نوجوان نسل اور باہر شہروں سے آئی فیملیوں کے نوجوان بچوں پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں ذرائع کے مطابق باہر سے آنے آئی ہوئی فحاشہ عورتیں جو جسم فروشی کے دھندے میں ملوث نے ہر روز مری نگہت زار پارک کی پولپس خد مت سنٹر کے سامنے یا پھر جی پی او چوک پوسٹ آفس کی مین سیڑھیوں میں رات کوڈیرے ڈال رکھے اور اپنے بکینگ کرتی ہیں جس کی وجہ سے نگہت زار پارک اور نری مال روڈ کے دل جی پی او چوک میں مجمع لگ رہتا ہے مرکزی انجمن تاجران مری کے سابق نائب صدر مری واجد عباسی کا کہنا ہے کہ میرا کاروبار جی پی او چوک مری سیروز گلی میں ہے جسکی وجہ سے روزانہ کی بنیاد پر لوگ ان عورتوں کی شکایت کرنے میرے پاس آ جاتے ہیں واجد عباسی کا کہنا ہے کہ محکمہ پولیس کو بار بار اطلاع دینے کے باوجود پولیس کی طرف سے کاروائی نہیں کی جا رہی جو کہ ایک سوالیہ نشان ہے لیکن مری پولیس کاروائی کرنے کی بجائے مختلف طریقوں سے ہیلے بہانے بنا کر کاروائی نہیں کر رہی مری اُن کا کہنا تھا کہ جب مری پولیس کو ان فحاشہ عورتوں کی اطلاع دی جاتی ہے تو پولیس موقف اختیار کر لیتی ہے کہ آپ مدعی بنیں درخواست لکھ کر دیں تا کہ ہم کاروائی کر سکیں بصورت دیگر ہم کاروائی نہیں کر سکتے یاد رہے مری پولیس نے گزشتہ دنوں ایک فحاشہ عورت کو بھی مری بدر کیا تھا جبکہ اب پولیس نامعلوم وجہ سے کاروائی کرنے سے قاصر ہے مری کے عوام اور سیاحوں نے اپیل کی ہے کہ ہوٹل مالکان اور فلیٹ مالکان ایسی عورتوں پر مکمل نظر رکھیں اگر نشاندہی ہو جاتی ہے کہ ہوٹل کمرہ یا فلیٹ کا کمرہ جو عورت یا مرد کرائے پر لے رہا ہے وہ مرد دلال یا عورت فحاشہ ہے تو ایسے لوگوں کو ہوٹل مالکان اور فلیٹ مالکان کسی صورت بھی اپنے ہوٹلوں یا فلیٹس میں رہائش نہ اختیار کرنے دیں۔