GPO MURREE Kohsar University 15

کوہسار یونیورسٹی مری کو سیاسی وابستگی رکھنے والے سرکاری ملازم دھندلانہ کے لیۓ سرگرم

مری (عمران ستی)پاکستان تحریک انصاف کے احسن اقدام کوہسار یونیورسٹی مری کو سیاسی وابستگی رکھنے والے سرکاری ملازم دھندلانہ کے لیۓ سرگرم

سیاسی مقاصد کو پایا تکمیل تک پہنچانے کے لیۓ طلبہ یونین کی پشت پناہی کر کے اُکسا رہے ہیں اور پی ٹی آئی حکومت اور کوہسار یونیورسٹی کے خلاف مظاہرے کروا کر متنازہ بنایا جا رہا ہے

تفصیل کے مطابق کشمیر پوائنٹ پر واقع ایک سرکاری ادارے میں اہم ذمہ داری پر تعینات سرکاری ملازم اور دو چار اور لوگ سرکاری ملازم ہونے کے باوجود وزیر اعظم پاکستان عمران خان پر تنقید افواج پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی اور اب کوہسار یونیورسٹی کے خلاف پروپیگنڈہ کر رہے ہیں

ڈپٹی کمشنر راولپنڈی انوار الحق نے جب ڈگری کالج جهیكاگلی کا دورہ کیا صفائی کے انتظامات نا ہونے پر پرنسپل اور اساتذہ سے برہمی کا اظہار بھی کیا گیا تھا

ڈگری کالج کے پرنسپل اور تمام اساتذہ وہیں ہوں گے اور کسی ٹیچر کا کنٹریکٹ ختم نہیں ہو گا انٹر تک کسی طالبعلم سے فیس نہیں لی جاۓ گی اور پنجاب حکومت کی نئی پالیسی بی ایس پروگرام پر کام جاری ہے
ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے سال 2020 تک بی اے، بی ایس سی کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے مراسلے کے مطابق طلبا و طالبات انٹر کے بعد نئے داخلے بی ایس پروگرام میں کئے جائیں گے اور اسی وجہ سے ڈگری کالج کو یونیورسٹی میں ضم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ انٹر کے بعد طلبا و طالبات راولپنڈی اسلام آباد کی یونیورسٹیوں میں جانے کہ بجاۓ پہلے سے بنی یونیورسٹی میں ہی داخلے لے سکیں گے

حکومتی پارٹی کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ نون لیگ کے ذمہ داروں نے کہا تھا کہ یونیورسٹی ضلع سے یہاں نہیں آسکتی مگر ایم این اے صداقت علی عباسی ایم پی اے لطاسب ستی کی کاوشوں کے بدولت مری میں یونیورسٹی بن چکی ہے جو نون لیگ کو راس نا آرہی ہے

اور کچھ شر پسند نون لیگ کی سیاسی وابستگی رکھنے والے سرکاری ملازم ہی طلبہ یونین کو اُکسا کر پشت پناہی کر رہے ہیں جس کا علم احساس اداروں کو ہو چکا ہے احساس اداروں نے سابقہ ریکارڈ اکھٹا کر لیا ہے اور عنقریب اعلی سطحی پر کاروائی عمل میں لائی جائے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں