Intense protest 13

خواجہ سراؤں کی بڑی تعداد نے ڈاکخانہ چوک مال روڈ مری پر شدیداحتجاج

               مری پشاور میں ناحق قتل ہونے والے خواجہ سرا کے قتل کے بعد ملک بھر کے خواجہ سراؤں میں شدید غم وغصہ واشتعال، خواجہ سراسراپہ احتجاج، مری میں بھی خواجہ سراؤں کی بڑی تعداد نے ڈاکخانہ چوک مال روڈ مری پر شدیداحتجاج کیا اور قاتلوں کی فوری گرفتاری کامطالبہ کیا،انہوں نے خواجہ سراؤں پرہونے تشدد اورمظالم کیخلاف بھی احتجاج کررہے تھے مظاہرین نے قاتلوں کی فوری گرفتاری اور اپنے مطالبات کے حق میں درج نعروں کے کتبے بھی اٹھا رکھے تھے خواجہ سراؤں کے رہنماء جنت اورمہوش مظاہرے کی قیاد ت کررہے تھے جبکہ سنی،مور،فرح،شمیلا،جیہ،کومل اور دیگر بھی مظاہرے میں شریک تھے اس موقع پر خواجہ سرا رہنماؤں نے مری میڈیا کو  بتایاکہ پورے ملک کی طرح مری میں بھی ہرصوبے تعلق رکھنے والے خواجہ سراؤں نے قتل کیخلاف مظاہرہ میں شرکت کی اور کہا کہ تین ماہ سے خواجہ سراؤں کے قتل او ران پر تشدد کے واقعات میں اضافہ ہواجو حکومت وقت کیلئے لمحہ فکریہ ہے انہوں نے حکومت سے کہا کہ اگر حکومت نے خواجہ سراؤں کو تحٖفظ فراہم نہ کیا تو یہ احتجاج تحریک میں بھی تبدیل ہوسکتا انہوں نے کہا وہ بھی اللہ پاک کی مخلوق ہیں انکو بھی جینے کا حق دیاجائے انہیں نوکریاں دی جائیں،حکومت ہماری حفاظت کرنے اور مظالم اورتشدد کوروکنے کے اقدامات کریں،بزرگ خواجہ سراؤں کو بیروزگاری الاؤنس دیا جائے،علاج معالجہ کی سہولیات،روزگار اور رہائشیں دی جائیں بڑی تعداد میں دیگر علاقوں سے آئے ہوئے خواجہ سرا  اپنے حقوق اور انصاف کے حصول کے لئے مری مال روڈ میں نکل آئے ان کا موقف تھا کہ پشاور میں ان کے ایک خواجہ سراح کا قتل انتہائی افسوسناک  واقع ہے اس کے قاتلوں کو فوری گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں