Maternal and child hospital 58

تین سال قبل زچہ بچہ ہسپتال موٹرایجنسی مری کاتعمیراتی کام شروع ہوا،اب تعمیراتی کام کو مکمل بند

                        مریتین سال قبل زچہ بچہ ہسپتال موٹرایجنسی مری کاتعمیراتی کام شروع کیاگیا تھا جوشروع سے ہی انتہائی سست روی کاشکار رہا اب تعمیراتی کام کو مکمل بندکرکے کمپنی چلی گئی ہے جبکہ گرد وغبار اور کیچڑ کے باعث اہلیان علاقہ شدید مشکلات کابیماریوں کاشکار ہورہے ہیں اس منصوبے کیلئے قیمتی سرکاری عمارت اور سینکڑوں سرسبزدرخت بھی کاٹے گئے ہیں ان خیالات کا اظہاراہلیان علاقہ معروف عالم دین قاری سیف اللہ سیفی،سیاسی وسماجی رہنماء سردار محمدرجب، حاجی تواب خان،رمضان شیخ،مولانا قاسم عباسی،جاوید عباسی اور دیگر نے مری میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا معززین علاقہ نے گذشتہ روز اسسٹنٹ کمشنر مری سے بھی ملاقات کی اور انکو تمام تفصیلات اور مسائل سے آگاہ کیاجس پر اے سی مری نے اس مسئلہ کو کمشنر راولپنڈی کے پیش کرنے کی یقین دہانی کروائی، انہوں نے  میڈاکو بتایاکہ اس منصوبے کا ٹھیکہ تعمیراتی کمپنی آئی کام(I.KOM)کو دیاگیا تھا جو اب کام ادھورا چھوڑ کر چلی گئی اور تمام تعمیراتی مشینری،سامان اور تعمیراتی میٹریل بھی اٹھا کر متعلقہ کمپنی کے ذمہ داران لے گئے مذکورہ ہسپتال کا کام تین سال قبل شروع کیاگیا تھا،محکمہ صحت پنجاب کا اس جگہ پر کروڑوں روپے کا قیمتی اورخوبصوت ریسٹ ہاؤس تھا جس کو ختم کردیاگیااور یہاں سے کروڑوں روپے کے قیمتی سرسبزدرخت بھی کاٹے گئے تھے کمپنی نے بڑے پیمانے پر اس علاقہ میں کھدائی کی جسکے باعث یہاں ہر وقت گردوغبار اور بارشوں کے دوران کیچڑ رہتا ہے جس سے اہلیان علاقہ بیماریوں کا شکارہورہے ہیں بڑے پیمانے پر کھدائی سے یہاں کاروڈ بھی ختم ہوگیا ہے اور لوگ گھروں سے باہر نہیں نکل سکتے معززین نے بتایا کہ اگر یہ زچہ بچہ ہسپتال تعمیر ہوجاتا تو اس سے مری کی 7 یونین کونسلوں کے ہزاروں لوگ مستفیدہوسکتے تھے لیکن غلط منصوبہ بندی اور من پسند کمپنی کو ٹھیکہ الاٹ کئے جانے سے کروڑوں روپے خرچ ہونے کے بعدمنصوبے کو ادھوراچھوڑدیاگیا ہے جو عوام کے پیسے کا ضیاع اور عوام دشمنی ہے انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب،کمشنرپنڈی ڈویثرن،ڈپٹی کمشنر راولپنڈی اورمحکمہ صحت کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس منصوبے کو فوری شروع کرکے پائیہ تکمیل تک پہنچایاجائے اور غفلت کے مرتکب ذمہ داران کیخلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے انہوں نے کہا کہ اگر فوری طور پر منصوبہ شروع نہ کیاگیا تو اہلیان علاقہ شدید احتجاج کرینگے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں