22

خاتون سب انسپکٹر نے اپنے منگیتر کو دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کرلیا

جنمونی ربہا بھارتی پولیس محکمے میں سب انسپکٹر کی ذمہ داریاں سرانجام دے رہی ییں،—فوٹو: بھارتی میڈیا

قانون سے بڑھ کر کچھ نہیں ہوتا پھر چاہے اس کی خلاف ورزی کرنے والے  اپنے  قریبی لوگوں کو ہی سزا کیوں نہ دینی پڑ جائے۔

قانون کی پاسداری کی ایک ایسی ہی اعلیٰ مثال بھارت کی ریاست آسام میں سامنے آئی جہاں ایک خاتون  سب انسپکٹر نے اپنے ہی منگیتر کو دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا۔

 بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاست آسام کے ضلع ناگاؤن میں جنمونی ربہا نامی خاتون جو بھارتی پولیس محکمے میں سب انسپکٹر کی ذمہ داریاں سرانجام دے رہی ییں، انہیں اپنے منگیتر  رانا پوگاگ  کے حوالے سے لوگوں کے ساتھ دھوکا دینے کا پتا چلا تو انہوں نے پہلے اس کے خلاف ایف آئی آر درج کروائی اور پھر جمعرات کے روز اسے گرفتار کرلیا۔

خاتون پولیس اہلکار کے مطابق ان کی اور پوگاگ نے گزشتہ سال اکتوبر میں منگنی کی تھی اور اس سال نومبر میں شادی کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔—فوٹو: بھارتی میڈیا
خاتون پولیس اہلکار کے مطابق ان کی اور پوگاگ نے گزشتہ سال اکتوبر میں منگنی کی تھی اور اس سال نومبر میں شادی کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔—فوٹو: بھارتی میڈیا

پولیس حکام نے بتایا کہ ملزم نے مبینہ طور پر تیل اور قدرتی گیس کمپنی کا پبلک ریلیشن آفیسر ہونے کا جھوٹا دعویٰ کیا اور مبینہ طور پر  ملازمتیں فراہم کرنے کا وعدہ کرکے کئی لوگوں کو لاکھوں روپے کا دھوکا دیا تھا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق تحقیقات کے دوران، پولیس کو پوگاگ کے گھر سے کمپنی  کی 11 جعلی مہریں اور شناختی کارڈ سمیت کئی مجرمانہ دستاویزات ملے۔

خاتون پولیس اہلکار کے مطابق ان کی اور پوگاگ نے گزشتہ سال اکتوبر میں  منگنی کی تھی اور اس سال نومبر میں شادی کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

دوسری جانب سوشل میڈیا پر  صارفین قانون کی پاسداری کرنے پر ربہا کی کافی تعریف کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ منگیتر کو  دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کرنے کے بعد منگنی برقرار ہے یا خاتون نے توڑدی اس حوالے سے تفصیلات معلوم نہیں ہوسکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں