kallar syedan Village Pandli 118

گاؤں پنڈدلی کی زیفہ خاتون بیوہ اپنے ساتھ ہونے والی ظلم و زیادتی اور ناانصافی کے بارے میں میڈیا سے گفتگو

کلرسیداں (عبدالعزیزپاشا) گاؤں پنڈدلی کی زیفہ خاتون بیوہ منظور اپنے بیٹے عمران خان اور بھائی فیصل شہزادپولیس کی طرف سے انصاف نہ ملنے پر کلرسیداں میڈیا دفتر پہنچ گئی تفصیلات کے مطابق مقامی پولیس کی طرف سے انصاف نہ ملنے پر موضع پنڈدلی کی رہائشی زیفہ بیوہ منظور حسین اپنے بیٹے عمر ان اور بھائی محمد فیصل کے ہمراہ خبریں دفتر پہنچ گئی اپنے ساتھ ہونے والی ظلم و زیادتی اور ناانصافی کے بارے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ 17 نومبر کو میرا بیٹا محمد عمران اپنے گھر کے اندر صحن میں کھڑے رکشہ کی صفائی کر رہا تھا ساتال کی آواز میں ٹیپ لگائی ہوئی تھی اسی دوران ہمارے پڑوسی مراد اور نثار ولد سید افضل ہمارے گھر میں اندر داخل ہو کر میرے کے بیٹے محمد عمران کو دونوں بھائیوں نے گریبان سے پکڑ لیا اور عمران کو ڈنڈے سے مارنا شروع کر دیا جس سے میرے بیٹے عمران کور سر میں ٹھنڈا لگنے سے شدید چوٹیں ہو آئی اور وہ موقع پر بے ہوش ہوگیا اس موقع پر مسلح پسٹل مراد نے میرے بیٹے کو گولی مارنے کی کوشش کی عطا بھائی کے دوران اپنے ہی بھائی نثار کو فائر کر کے زخمی کر دیا اس دوران موقع پر طاہر علی اور فیصل شہزاد نے بڑی مشکل سے میرے بیٹے کی جان چھڑوائیں انہوں نے کہا کہ مراد خان نے اپنے بھائی کو خود ساختہ فائر کرکے مقامی پولیس کے ساتھ ملی بھگت کرتے ہوئے ہمارے خلاف تھانہ صدر حسن ابدال میں اقدام قتل کا جھوٹا مقدمہ نمبر،410/20بجرم 324ت پ درج رجسٹر کروایا جس میں کوئی صداقت نہیں میرے بیٹے عمران خان نے اس سلسلے میں ایک تحریری درخواست ایس ڈی پی او سرکل صدر سرکل کو بھی دی لیکن ڈی ایس پی انصاف دینے کے بجائے ہماری کوئی بات نہ سنی مذکورہ ڈی ایس پی صدر سرکل چمک کے عوض ہمیں انصاف فراہم کرنے کے بجائے الٹا خود ساختہ اور جھوٹا مقدمہ درج کر وانے والے مراد اور نثار کی پشت پنائی کر رہے ہیں ہمیں انصاف دینے کے بجائے بے عزت کر کے اپنے دفتر سے نکال دیا میرا بیٹا عمران خان مقدمہ ہذا میں عبوری ضمانت پر ہے تھانہ صدر حسن ابدال کا ایس ایچ او سب انسپکٹرنیاز خان کی طرف سے میرے بیٹے عمران خان کو بھی دھمکیاں دی جا رہی ہیں کے تمہاری ضمانت کینسل ہوگی تم تھانے ہی آؤگے ہمیں مقامی پولیس اور ڈی ایس پی کی طرف سے انصاف نہیں دیا جارہا میں میڈیا کی وساطت سے آئی جی پنجاب انعام غنی۔ آر پی او راولپنڈی عمران احمر ڈی پی او اٹک سید خالد ہمدانی سے اپیل کرتی ہوں کہ جھوٹے مقدمے کی غیر جانبدارنہ انکوائری کرکے مجھے فوری طور پر انصاف فراہم کرتے ہوئے اس جھوٹے اور بے بنیاد من گھڑت مقدمہ کو خارج کیا جائے