Nazakat Hussain Raja 80

ممتاز سیا سی و سماجی نوجوان شحضیت انجینئر نزاکت حسین راجہ نے ایک بیان جاری

کلرسیداں (عبدالعزیزپاشا) ممتاز سیا سی و سماجی نوجوان شحضیت انجینئر نزاکت حسین راجہ نے ایک اخباری بیان جاری کر تے ہو ئے کہا ہے کہ دکھی لوگوں کی خدمت اور علاقائی تعمیر وترقی کاجذبہ رکھتا ہوںاسلام خدمتِ اِنسانیت کا دین ہے۔ اِس میں تمام اِنسانیت کی محبت اور خدمت کو لازمی قرار دیتے ہوئے عبادت کا درجہ دیا گیا ہے۔ لہذا ضرورت اِس امر کی ہے کہ اِسلام کی تعلیماتِ خدمت و محبت کو خوب فروغ دیا جائے۔اِسلامی تعلیمات میں تمام اِنسانیت کی خدمت ایک مقدس فریضہ ہے۔ ہماری بدقسمتی ہے کہ ہم نے عبادات کو صرف نماز، روزہ اور حج تک محدود کر دیا ہے۔ اِسلام میں اِنسانیت کی خدمت تو کجا بے زبان جانوروں کا بھی اس قدر خیال رکھنے کا حکم ہے کہ ایک پیاسے کتے کو پانی پلانے والا جنت کا مستحق قرار پاتا ہے اور بلی کو بھوکا مارنے پر جہنم کی سزا سنا دی جاتی ہے۔قرآن حکیم کے مطابق امتِ مسلمہ تمام اِنسانوں کی فلاح وبہبود کے لیے پیدا کی گئی ہے جو بلا تفریقِ رنگ ونسل و مذہب پوری اِنسانیت کے لیے سراپائے خیر ہے۔ اللہ رب العزت نے قرآن مجید میں خدمتِ اِنسانیت پر اس قدر زور دیا ہے کہ ہمارے جائز اور حلال مال میں محتاجوں اور مساکین کا مخصوص حصہ مقرر فرمایا ہے:اِسلام خدمتِ خلق میں رنگ ونسل اور مذہب کا امتیاز نہیں رکھتا۔ پڑوسی کے حقوق ہوں یا مریض کی عیادت، مسافر کے حقوق ہوں یا ادائیگی زکواة، کسی قسم کے حقوق العباد میں مسلمان اور غیر مسلم کا فرق نہیں رکھا اِسلام خدمتِ خلق میں بہترین اسوہ اور تعلیمات رکھتا ہے۔ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے خدمت اِنسانیت کو نہ صرف عبادت بلکہ اللہ کی رضا اور اس کی مدد کے حصول کا ذریعہ قرار دیتے ہوئے اِرشاد فرمایا:اللہ تعالی اس وقت تک اپنے بندے کی حاجت روائی کرتا رہتا ہے جب تک بندہ اپنے (مسلمان) بھائی کی حاجت روائی میں (مصروف) رہتا ہے۔