ٹی ایچ کیو کہوٹہ تعینات ڈاکٹرز کے لیئے دوبئی بن گیا

کہوٹہ (راجہ نعمان علی)ٹی ایچ کیو کہوٹہ تعینات ڈاکٹرز کے لیئے دوبئی بن گیا۔آنیوالے مریضوں کو ہر ڈاکٹر اپنی اپنی مرضی کی لیبارٹری کے ٹیسٹ لکھ کر دینے لگے۔ہربڈاکٹر اپنی من پسند مرضی کے ہی ٹیسٹوں کو مستند سمھجنے لگا۔دوائیاں بھی پرائیویٹ میڈیکل سٹورز کی لکھ کر دینے لگے۔اوپر سے حسن اخلاق کی ٹانگیں بھی توڑی جانے لگیں کہوٹہ کے سرکاری اسپتال میں سہولیات کا فقدان تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کہوٹہ لیبارٹری چند ٹیسٹ کی سہولیات موجود ڈاکٹر مریضوں کو پرائیویٹ لیبارٹری سے ٹیسٹ کرنے پر مجبور کرنے لگا غریب مریض ڈاکٹر کے رویے سے مایوس دکھائی دینے لگے اسپتال میں سہولیات کے فقدان پر اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کی اپیل تفصیلات کے مطابق ٹی ایچ کیو اسپتال کہوٹہ میں لیبارٹری ٹیسٹوں کی صورتحال انتہائی محدود حد تک اسپتال میں علاج کروانے والے مریضوں کو ڈاکٹر کی جانب سے پرائیویٹ لیبارٹری سے ٹیسٹ کروانے پر مجبور کیا جانے لگا سرکاری ہسپتال کے ڈاکٹر مریضوں کو دیکھتے ہیں ایک چیٹ پر ٹیسٹ لکھ کر دیتے ہیں کہ باہر جائے اور اس لیبارٹری سے ٹیسٹ کروا کر آئیں گے پھر آپ کو دوائی لکھ کر دیتے ہیں ٹیسٹوں کی فیس2000 سے 3500 روپے تک وصول کی جانے لگی غریب مریض سرکاری ہسپتال میں فری علاج معالجہ کے لئے سرکاری اسپتالوں کا رخ کرتے ہیں تحصیل ہیڈ کوارٹر کو ہوتا میں سہولیات نہ ہونے کے باعث غریب مریضوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے مریضوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الہٰی ،ڈاکٹر یاسمین راشد اور محکمہ ہیلتھ پنجاب سے ٹی ایچ کیو اسپتال کہوٹہ سہولیات کا فقدان اور ڈاکٹروں کے غریب مریضوں کو پرائیویٹ لیبارٹری پر ٹیسٹ کروانے پر مجبور کرنے پر سخت نوٹس لینے کی اپیل کردی ،،،

جواب دیں