65

حلقہ این اے ستاون اور بالخصوص تحصیل کہوٹہ ترقیاتی کاموں میں سب سے پیچھے رہ گئے ہیں فضل کریم

کہوٹہ (ملک محمود اختر سے) حلقہ این اے ستاون کی مشہو ر سیاسی و سماجی شخصیت و امید وار برائے ایم این اے ملک فضل کریم اعوان نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ حلقہ این اے ستاون اور بالخصوص تحصیل کہوٹہ ترقیاتی کاموں میں سب سے پیچھے رہ گئے ہیں، اس کی مین وجہ یہ ہے کہ یہ احساس علاقہ ہے، اس کے ساتھ ساتھ نااہل قیادت ہونے کی وجہ سے یہ علاقے گناہ گوں مسائل کا شکا رہے،میں تحریک انصاف کا ایک کارکن ہونے کے ناطے وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے اور حکو مت پاکستان کے تمام اعلی عہدوں پر فائز اور آر می چیف جنر ل جاوید باوجوہ، ڈی جی ایس پی آر سے مطالبہ کرتا ہوں کہ فوری طو ر پر اس علاقے کی پسماندگی پر غو ر و فکر کریں اورکہوٹہ کے علاقے سے دو تحصیلیں کلر سیداں اور کوٹلی ستیاں جنم لے چکی ہیں، لہذا اس کے شایان شان کے مطابق کہوٹہ کو فل فو ر ضلع کا درجہ دیا جائے،یہاں اس کی اپنی یو نیو رسٹی ہو نی چاہیے جو دنیا کو امن کا پیغام دے،ناکہ کیمپس جسطر ح ایم این اے صداقت عباسی اعلان کر کے گئے، تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتا ل کو فل فو ر پاکستان کے بڑے ہسپتالوں کی طر ح اپ گریڈ کیا جائے جو کسی بھی ایمر جنسی یا نیشنل ڈیسساسٹر سے نمٹنے کیلئے مکمل اہلیت رکھتا ہو، اور اس کے علاوہ چونکہ یہ ریاست جموں کشمیر کا دروازہ مانا جاتا ہے، اس کیلئے جو شاہد خاقان عباسی کے دو ر میں سڑک کاک پل براستہ سہالہ چکیا ں سے ہوتی ہوئی ہوتھلہ سے گز ر کر براستہ سرو ٹ چھنی ٹھنڈے پانی کی طر ف جاتی ہے، اس پر عمل درآمد کرکے کہوٹہ کو بائی پاس کی سہو لت میسر کی جائے، اور اس علاقے کو آج سے 1سو سال قبل جس طر ح تجارتی منڈی تھی اسکو دوبارہ بحال کیا جائے،تا کہ پاکستان پر جو بیرونی قرضے چڑھے ہوئے ہیں ہم انکو اتنانے میں مدد فراہم کر سکیں،اس کے علاوہ علاقے میں بہت سے بڑے نالے ہیں مثلا کے طو ر پر نالہ لنگ، نالہ کلمن، دکھالی کس کے پانی کو زخیرہ کرنے کیلئے مختلف جگہوں پر چھوٹے چھوٹے ڈیمز لگائے جائیں، اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہو گا کہ پاکستان میں جو پانی کی شدید قلت آرہی ہے اور پاکستان کو انٹر نیشنل بین الاقوامی لیول پر جن 36ممالک میں 1ہزا ر لیٹر ز پر سال فی آدمی جو پانی در کار ہوتا ہے اس سے بہت ہی کم رہ گیا ہے،یہ لیو ل ایک خطر ناک حد کے بہت قریب ہے پانچ سو لیٹرز فی کس ہر سال بالخصوص 2025سے قبل پورے پاکستان کو پانی کا ذخیرہ کرنے کیلئے تیار رہنا چاہیے، میں حلقہ این اے ستاون کی نمائندگی کرتے ہوئے حکومت پاکستان اور باا لخصو صی وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور آر می چیف جنرل قمر جاوید باجواہ سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ اپنی پو ری تواجہ اس مسلئے پر دیکر اس مسلئے کا حل نکالیں اور نالہ لنگ جیسے بیشتر نالوں پر ڈیمز بنائے جائیں اور مچھلیاں پیدا کرنے کیلئے پلانٹس لگائے جائیں اور پانی صاف کرکے پینے کا پانی عوام کو مہیا کیا جائے اور باقی پانی کو بو تلوں میں بند کرکے ذخیرہ کیا جائے۔