police logo 83

تھانوں میں درخواستیں ڈیل خفیہ کمروں اور ہوٹلوں میں

کہوٹہ (ملک محمود اختر سے )ضلع راولپنڈی کے اکثر دیہی تھانوں ،تھانہ کہوٹہ ، تھانہ کلرسیداں اوردیگر تھانوں میں فرنٹ ڈیکس کے بجائے بعض نکے بڑے تھانیداروں کی اجارہ داری کا انکشاف ،سائلین سے درخواستیں وصول کی جاتی ہیں ، اور ان درخواسوں کی ڈیل خفیہ کمروں اور ہوٹلوں میں کی جاتی ہیں ، ذرائع کے مطابق ان درخواستوں کی ڈیل میں بھاری رشوت لی جاتی ہے ، ان تھانوں کے ٹائو ٹ مافیا اور نکے بڑے تھانیداروں نے شریف لوگوں کا جینا محال کر رکھا ہے ، ٹائو ٹ مافیا اتنے سیاسی بااثر ہیں کہ پروفیشنل صحافیوں کو روکنے کیلئے طرح طرح کے ہتھکنڈے استعمال کیئے جاتے ہیں ،عوامی سماجی ،سیاسی ، صحافتی حلقوں نے وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار ، آئی جی پنجاب ، آر پی ائو ، سی پی ائو راولپنڈی سے مطالبہ کیا ہے کہ ان تھانوں کے اندر خفیہ مانیٹر نگ کی جائے اور عرصہ دراز سے تعینات نکے بڑے تھانیداروں اور ملازمین کو فوری ضلع بد ر کیا جائے اور تھانوں کے باہر ایک بو رڈ آویزاں کیا جائے کہ اگر کسی سائل نے درخواست بغیر فر نٹ ڈیسک کے دی تو اس سائل اور اس پولیس آفیسر کے خلاف کاروائی ہو گی ،یہ شکایات زیادہ تر تھانہ کہوٹہ ، تھانہ کلرسیداں سمیت رولر تھانوں کی ہیں اور دوسرا جو لو گ فرنٹ ڈیسک پر درخواستیں دیتے ہیں شاتر اور ٹائو ٹ مافیا مظلوم لوگوں کی آواز دبانے کیلئے اس تفتیشی آفیسر سے ملکر معاملہ کا رخ تبدیل کراکر عام آدمی کا تھانوں سے اعتبا ر ختم کراکر انکو خوار کیا جاتا ہے ، اعلی حکام خداراہ ،ڈی ایس پی ، ایس ایچ ائو حضرات کو ہدایات جاری کریں کہ تھانوں میں ٹائو ٹ مافیا کا داخلہ بند کیا جائے اور مکمل پابندی عائد کی جائے اور عوام پولیس تعاون کے سلسلہ کو برقرار رکھنے کیلئے فوری اقدامات کیئے جائیں