Malik Mahmood Akhtar 13

عوام دوٹائم کی روٹی کے بجائے ایک ٹائم کی روٹی کھانے پر مجبو ر ملک محمود اختر

کہوٹہ :وزیر اعظم پاکستان عمران خان متوجہ ہوں ،وزیر اعظم پاکستان عمران خان مہنگائی اور کرپشن پر کنٹرول کریں ،ہر محکمہ بے لغام ہوچکا ہے ، بغیر رشو ت جائز کام بھی نہیں ہوتے ،مہنگائی کا گراف کئی گنا بلند ہوچکا ہے ، 60فیصد عوام دوٹائم کی روٹی کے بجائے ایک ٹائم کی روٹی کھانے پر مجبو ر ہیں ، بغیر رشو ت اور سفارش کے پڑھے لکھے نوجوان بھرتی نہیں ہوسکتے،ایک محکمہ میں پنشن کے بعد اس ریٹائرڈ ملازم کو نوکری دینے کے بجائے ایک پڑھے لکھے نوجوان کو بھرتی کیا جائے ، ان خیالات کا اظہا ر گزشتہ رو ز سینئر صحافی و صدر پوٹھوہار پریس کلب کہوٹہ ملک محمود اختر نے ایک بیان میں کیا انہوں نے مزید کہاکہ جناب عمران خان صاحب آپ پر عوام کی بڑی تواقعات تھی کیونکہ عوام سابقہ حکومتوں سے تنگ آچکے تھے ، مگر آج وہ حالت ہے کہ صرف تحصیل کہوٹہ کی بات کی جائے تو یہ بات لکھنے اور کہنے میں کوئی حرج نہیں کہ محکمہ مال ، محکمہ زراعت ، محکمہ سوئی گیس اور دیگر محکموں میں اس قد ر کرپشن اور جعلسازی ہے کہ سابقہ حکومت کی نسبت تمام ریکارڈ ٹوٹ چکے ہیں ، جس محکمے میں جائو کرپشن رشو ت کے سوا کچھ نہ ہے ، محکمہ صحت کی یہ حالت ہے کہ مریض حادثے کی صورت میں تڑپتا رہتاہے مگر اسکو پٹی کرنے والا کوئی نہیں ،میں نے اپنی آنکھوں کے سامنے ٹھنڈے فرشوں ، گندے بستروں پر مریضوں کو دم توڑتے دیکھا،صرف مریضوں کو پرچی تھمادی جاتی ہے ، پرائیو یٹ کلینک میں عوام کو زبحہ کیا جارہا ہے ، کسی کو خدا کا خوف نہ ہے ، جناب عمران خان صاحب تھانہ کہوٹہ کی یہ حالت ہے کہ اگر اڈیالہ جیل کا دورہ کیا جائے تو صرف تھانہ کہوٹہ کے دلیر بہادر رشو ت خور ٹائو ٹ مافیا کے شیر دل نکے بڑے تھانیداروں کے ہاتھوں جو ملزمان لو ہے کی سلاخوں کے پیچھے بیٹھے ہیں وہ کم ازکم 80فیصد بے گنا ہ ملیں گے ،جو مجرم بنائے گئے ہیں ، جناب عمران خان صا حب یہ بڑے دکھ سے لکھنا پڑ تا ہے کہ یتیموں بیوائوں کی زمینوں پر زور آور لوگوں نے زبر دستی قبضے کر لیئے ہیں اگر وہ فریاد کرکے تھانہ جاتاہے تو وہ تھانیدار قبضہ گروپوں سے رشوت لیکر ان یتیموں اور بیوائوں پر جھوٹے مقدمات درج کر کے بے عزت بھی کرتے ہیں ،محکمہ مال بھی ان قبضہ گروپوں کی سپورٹ کرتے ہیں ،بر حال مختصر بات یہ ہے کہ صرف تحصیل کہوٹہ میں ظلم کی انتہا ہے سرکاری زمینوں پر سیاسی قبضہ مافیا کا راج ہے اور ہر طرف لو ٹ مار کا بازار گرم ہے ، ہر محکمہ بے لغام ہے ، کوئی پو چھنے والا نہیں ، خداراہ تحصیل کہوٹہ کی عوام پر رحم فرمایا جائے اور ان محکموں سے عرصہ دراز سے تعینات سربراہان اور آفیسران ملازمین کو ضلع بد ر کیا جائے اور کرپشن پر کنٹرول کیا جائے ،ورنہ ہر دوسرا شخص ڈاکو بن کر لوگوں کے سامنے سے روٹی بھی زبردستی اٹھا کر لے جائے گا ، پڑھے لکھے نوجوان 300کی دیہاڑی لگا کر اپنا پیٹ پال رہے ہیں اور رشو ت اور سفارشی لوگ میٹر ک پاس آفیسر بن گئے ہیں ۔