National Bank Kahuta 11

نیشنل بنک کہوٹہ برانچ کی کا رستا نیا ں

کہوٹہ (ملک محمو د اختر سے)نیشنل بنک کہوٹہ برانچ کی کا رستا نیا ں، شہر ی زمین پر بیٹھ کر بینک کھلنے کا انتظا ر کرنے لگے،بیٹھنے کو کرسی تک میسر نہیں، پا نی نہ ہونے سے آئے رو ز بز رگ شہری شدید گرمی اور دھو پ کی وجہ سے بیما ر ہو گئے،گارڈز انتہا ئی بد تمیز ہیں، عملہ منظو ر نظر افراد کو ترجیح جبکہ غریبوں کو لمبی لا ئینوں میں کھڑا رکھتا ہے، گزشتہ رو ز عوامی شکا یا ت پر نمائندہ نے بنک کا دورہ کیا تو بنک کے با ہر نہ ہی کو ئی کرسی اورنہ ہی پینے کو پا نی، بز رگ خواتین اور مر د نیچے زمین پر بیٹھے بنک کھلنے اور بنک منیجر کے سیٹ پر بیٹھنے کا انتظا ر کر رہے تھے، جبکہ موقع پر موجود ملک حسام، حسنین محمو د، ملک خالد اعوان، کا شف حسین سے نمائندہ نے پو چھا تو انہوں کا کہنا تھا کہ بنک کے با ہر کھڑے گارڈ انتہائی بد تمیز اور غیر اخلا قی زبان استعمال کرتے ہیں، جبکہ منیجر صا حب کی کوئی خبر نہیں، عملہ منظو ر نظر افراد کے کام پہلے جبکہ غریب لو گو ں کو سا را دن بنک کے با ہر کھڑا رکھتا ہے،اگر کہا جائے کہ بنک کے اند ر صر ف بیٹھنے دو تو عملے کی جانب سے کہا جاتا ہے کہ کرو نا وائرس کی وجہ سے آپ اندر داخل نہیں ہوسکتے، شہر یو ں نے بتا یا کہ ہم جب بھی شکا یا ت کرتے ہیں تونیشنل بنک کہوٹہ برانچ کے عملے کے چند ٹا ؤ ٹ ہمیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتے اور تھریڈ کرتے ہیں اور انکی وکا لت کیلئے باہر نکل آتے ہیں، شہریو ں نے وزیر اعظم پا کستان عمران خان، چیف جسٹس آف سپریم کورٹ، وزیر اعلی پنجاب اور نیشنل بنک کے اعلی آفیسرا ن سے فو ری نوٹس لینے اور عملہ سمیت منیجر کو کہوٹہ سے فو ری تبد یل کریں اور نیشنل بنک کہوٹہ برانچ میں شہریوں کے بیٹھنے کیلئے کرسیاں اور پینے کیلئے پا نی مہیاکیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں