Pandadankhan Motorway 14

پنڈدادنخان موٹر وے سے ملانے والی سڑک پر بھیلووال کے نزدیک خستہ پلی زمین بوس

پنڈدادنخان(عدنان یونس) پنڈدادنخان لِلہ روڈ تعمیر سے لے کر مرمت تک کے دعوے ٹھس محکمہ ہائی وے اور منتخب نمائندوں کی بے حسی پنڈدادنخان موٹر وے سے ملانے والی سڑک پر بھیلووال کے نزدیک خستہ پلی زمین بوس ہوگئی سیاسی نمائندوں سمیت سوئی ہوئی انتطامیہ منظر سے تاحال غائب ہے،اہل علاقہ نے اپنی مدد آپ کے تحت مٹی ڈالنا شروع کر دی۔تفصیلات کے مطابق تحصیل پنڈدادنخان کوموٹر وے سے ملانے والے بائیس کلو میٹر سٹرک کی خستہ حالی اپنی مثال آپ ہے پاکستان تحریک انصاف کے دور میں اس اہم اور مصروف ترین روڈ کو مکمل طور پر نظرانداز کیا جا رہا ہے دوتین مرتبہ حکومتی سپوٹروں نے اس سڑک کی مرمت اور از سر نو تعمیر کے نوٹس سوشل میڈیا پر لگائے جو حسب راوئت لولی پاپ نکلے،پنڈدادنخان تا للہ موٹر وے پہنچنے کے لئے بیس منٹ کا راستہ طے کرنے کے لئے ڈیڑھ گھنٹہ معمول بن چکا ہے لِلہ روڈ پر تین چھوٹی برساتی پلیاں اور تین بڑے پل ہیں جو کہ ایک سے بڑھ کر ایک خستہ حالت میں ہیں روڑ مکمل طور پر کھنڈرات کا منظر پیش کررہا ہے اور سڑک کے کنارے بھی ختم ہوچکے ہیں متعدد جگہوں سے سڑک کا نام و نشان تک نہیں رہا کئی کئی فٹ گہرے گڑھے اور کئی کئی میٹر لمبے شگاف گنتی میں آتے ہی نہیں پنڈدادنخان کے ہسپتالوں میں سہولیات کے فقدان باعث دوسرے شہروں میں منتقل کرنے کے لیے اسی روڈ کا استعمال کیا جاتا ہے ذمہ داران کی نا اہلی کے باعث متعدد مریض راست میں ہی دم توڑ جاتے ہیں اس صورت حال میں خاص کر ایمرجنسی مریضوں کا ہسپتالوں تک بر وقت پہنچنا انتہائی دشوار ہوگیا ہے اب تو روڈ کی ابتر حالت کے پیش نظر عوام نے اپنی مدد آپ کے تحت مٹی ڈالنا شروع کر دی ہے پچھلے ماہ وفاقی وزیر نے تعمیر کے بعد مرمت کے فوری اقدمات کے اعلانات تو کئے لیکن مسلہ جوں کا توں ہے اہل علاقہ نے وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب سے دردمندآنہ اپیل ہے کہ اس سڑک کا کام جلد از جلد شروع کروایا جائے کسی بڑے حادثہ کا انتظار کئے بغیر تعمیر یا مرمت کے ہنگامی بنیادوں پر احکامات جاری کئے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں