عالمی ادارہ صحت 31

پاکستان میں کورونا وائرس کی صورتحال پر تبادلہ خیال

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے پاکستان میں عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو۔ایچ۔او) کے سربراہ ڈاکٹر پلیتھا گونراتھنا ماہیپالا کی ملاقات

پاکستان میں کورونا وائرس کی صورتحال پر تبادلہ خیال

ڈبلیو ایچ او کے سربراہ نے اسپیکر کو عالمی ادارہ صحت کے پاکستان میں کلیدی منصوبہ جات کے بارے میں آگاہ کیا

اسپیکر نے پاکستان کے لیے عالمی ادارہ صحت کے کورونا وائرس (کوویڈ19) جیسے وبائی امراض سے نمٹنے کے لئے تعاون کو سراہا

کورونا وائرس دنیا بھر میں خطرناک حد تک پھیلا جس کے سنگین نتائج برآمد ہوئے۔

ڈبلیو ایچ او کے پاکستان میں سربراہ نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے حکومتی کوششوں کوسراہا

پاکستان اس خطے کا واحد ملک ہے جہاں یہ وبائی مرض اندازے سے کم پھیلا

پاکستان کی حکومت کی لاک ڈوان کی پالیسی سے پھیلاو کو روکنے میں مدد ملی۔

عوام نے اگر احتیاط نہ کی تو یہ وائرس زیادہ پھیل سکتا ہے۔ سربراہ ڈبلیو ایچ او

حکومت پاکستان کی جانب سے اس وائرس سے بچاو کے لئے کئے جانے والے اقدامات قابل تحسین ہیں۔

حکومتی اقدامات سے پاکستان میں اس وائرس کو پھیلنے سے روکنے میں مدد ملی۔ ڈاکٹر پلیتھا

امید ہے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) پاکستان کے لئے اپنی قابل قدر مدد اور تعاون کی فراہمی جاری رکھے گا۔ اسپیکر

عوام کو احتیاطی تدابیر اختیار کروانے کے لیے سخت اقدامات کریں۔ ڈبلیو ایچ او سربراہ

ڈبلیو ایچ او کی جانب سے ڈاکٹر پلیتھا نے صوابی کے لیے کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے حفاظتی سامان اور ٹیسٹ کٹس بھی میہا کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں