کمیٹی براے قومی اسمبلی ورچئل اجلاس 26

کمیٹی براے قومی اسمبلی ورچئل اجلاس کا پارلیمانی رہنماؤں سے مشاورت کا معاملہ

کمیٹی براے قومی اسمبلی ورچئل اجلاس کا پارلیمانی رہنماؤں سے مشاورت کا معاملہ

کمیٹی برائے قومی اسمبلی ورچئل اجلاس نے قومی اسمبلی میں پارلیمانی رہنماؤں کو اگلے اجلاس میں مدعو کرنے کا فیصلہ

کمیٹی کا اگلا اجلاس مورخہ 29 اپریل بروز بدھ پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہو گا۔

چئرمین سید فخر امام کی جانب سے پارلیمانی راہنماؤں کو شرکت کے لیے خطوط لکھ دیے

کمیٹی کی 21 اپریل کو ہونے والے اجلاس میں قومی اسمبلی کے ورچئل کے بجائے حقیقی اجلاس بلانے کا متفقہ فیصلہ کیا گیا۔ خط کا متن۔

کمیٹی نے کورونا وائرس کے دوران قومی اسمبلی کے اجلاس کے ایجنڈے اور طریقہ کار پر مزید تبادلہ خیال کے لیے پارلیمانی رہنماؤں سے مشاورت کا فیصلہ کیا۔ خط کا متن

پاکستان پیپلز پارٹی پارلمنٹیرین کے پارلیمانی رہنما بلاول بھٹو زرداری، پاکستان مسلم لیگ ن کے خواجہ محمد آصف اور عوامی مسلم لیگ پارٹی کے شیخ رشید احمد کو شرکت کی دعوت دی گی ہے۔

متحدہ مجلس عمل پاکستان سے اسد محمود، جمہوری وطن پارٹی سے نوابزادہ شاہ زین بگٹی اور عوامی نیشنل پارٹی سے امیر حیدر اعظم خان مدعو۔

پاکستان تحریک انصاف سے ڈپٹی پارلیمانی لیڈر مخدوم شاہ محمود حسین قریشی اور جی ڈی اے سے غوث بخش خان مہر کو شرکت کی دعوت دی گئ ہے۔

پاکستان مسلم لیگ سے طارق بشیر چیمہ، بلوچستان عوامی پارٹی سے خالد حسین مگسی، بلوچستان نیشنل پارٹی سے محمد اختر مینگل، اور متحدہ قومی موومنٹ پاکستان سے ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی مدعو۔

کمیٹی پارلیمانی رہنماؤں سے مشاورت کے بعد کرونا وائرس کی موجودگی کے دوران قومی اسمبلی کے ورچئل اجلاس منعقد کرنے کے لیے اپنی سفارشات اسپیکر قومی اسمبلی کو پیش کرے گی۔

مشاورت کے لیے مدعو کیے جانے والے پارلیمانی رہنما وڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کر سکیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں