زیر علاج نوازشریف 58

سروسز اسپتال میں زیر علاج نوازشریف کے پلیٹیلیٹس سیلز میں بہتری

لاہور کے سروسز اسپتال میں زیر علاج سابق وزیراعظم نوازشریف کی حالت میں بہتری آرہی ہے اور ان کے پلیٹیلیٹس کی تعداد 29 ہزار سے بڑھ چکی ہے۔21 اکتوبر کی رات کو سابق وزیراعظم کو طبیعت ناساز ہونے پر قومی احتساب بیورو (نیب) کے دفتر سے سروسز اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں وہ زیرعلاج ہیںنواز شریف کی حالت بہتر، پلیٹیلیٹس کی تعداد 20 ہزار تک پہنچ گئینواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کے مطابق رات 8 بجے سابق وزیراعظم کے خون کے نمونوں میں پلیٹیلیٹس کی تعداد 16 ہزار رہ گئی تھی جو اسپتال منتقلی تک مزید کم ہوکر 12 ہزار رہ گئی تھی۔

گزشتہ روز اسپتال میں ہی ان کے پلیٹیلٹس کی تعداد خطرناک حد تک 2 ہزار رہ گئی تھی جس کے بعد انہیں انہیں 3 میگا یونٹس پلیٹیلیٹس لگائے گئے تھے جس کے بعد ان کی پلیٹیلیٹس کی تعداد 20 ہزار سے تجاوز کرگئی تھی۔

سروسز انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنس(سمز) کے پرنسپل پروفیسر محمود ایاز کے مطابق سابق وزیراعظم کے پلیٹیلیٹس کی تعداد 29 ہزار سے بڑھ چکی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو پلیٹیلیٹس لگانے سے ان کی طبیعت میں بہتری آئی ہے۔

سابق وزیراعظم کے پلیٹیلیٹس کی تعداد دن میں ایک بار پھر تشویشناک حد تک کم ہوگئی تھی
دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کی صحت سے متعلق اسپتال میں مسلسل مانیٹرنگ ہورہی ہے اور ان کے پلیٹیلیٹس کی تعداد آج دن میں ایک بار پھر تشویشناک حد تک کم ہوگئی تھی۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف کے پلیٹیلیٹس کی تعداد 29 ہزار سے کم ہوکر 7 ہزار پر آگئی تھی جس پر سابق وزیراعظم کو دوبارہ پلیٹیلیٹس یونٹ لگایا گیا جبکہ میڈیکل بورڈ کی معاونت کیلئے ایک ڈاکٹر اسلام آباد اور ایک کراچی سے بلایاگیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی نواز شریف کیلئے ہر ممکن طبی سہولت یقینی بنانے کی ہدایت
وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو ٹیلی فون کرکے سابق وزیراعظم نواز شریف کیلئے ہر ممکن طبی سہولت یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔

عمران خان کی نواز شریف کیلئے ہر ممکن طبی سہولت یقینی بنانے کی ہدایت

وزیراعلیٰ پنجاب نے وزیراعظم کو اسپتال میں نواز شریف کیلئے سہولیات سے آگاہ کیا جبکہ عمران خان نے نواز شریف کے ذاتی معالج سے بھی رابطے میں رہنے کی ہدایت کی۔

وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے وزیراعظم کو محکمہ صحت کے اقدامات سے بھی آگاہ کیا۔

نواز شریف کی صحت کے معاملے میں بے حسی اور مجرمانہ غفلت کی گئی: ن لیگ
سابق وزیراعظم کی صحت کے حوالے سے مسلم لیگ (ن) کے رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی صحت کے معاملے میں بے حسی اور مجرمانہ غفلت کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ کوٹ لکھپت جیل میں دی گئی طبی سہولیات واپس لی گئیں اور بغض کی وجہ سے نوا زشریف، مریم نواز اور شاہد خاقان کی میڈیکل رپورٹس چھپائی جارہی ہیں۔

خیال رہے کہ نواز شریف کے طبی معائنے کیلئے 6 رکنی میڈیکل بورڈ بنایا گیا ہے جس کے سربراہ سمز کے پرنسپل پروفیسر محمود ایاز ہیں۔

دیگر ارکان میں ڈاکٹر کامران خالد، ڈاکٹر عارف ندیم ،ڈاکٹر فائزہ بشیر، ڈاکٹر خدیجہ عرفان اور ڈاکٹر ثوبیہ قاضی شامل ہیں۔

میڈیکل بورڈ سینئر میڈیکل اسپیشلسٹ، گیسٹرو انٹرولوجسٹ، انیستھیزیا اسپیشلسٹ اور فزیشن پر مشتمل ہے۔

یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف چوہدری شوگر مل کیس میں نیب کی حراست میں ہیں جبکہ احتساب عدالت کی جانب سے انہیں العزیزیہ ریفرنس میں7 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں