اپوزیشن کا شدید احتجاج 22

‏قومی اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن کا شدید احتجاج اور نعرے بازی

‏قومی اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن کا شدید احتجاج اور نعرے بازی

‏عوام کوریلیف پہنچانے کیلئے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا،حماداظہر‏

توانائی اور خوراک سمیت 180 ارب کی رقم مختص کی ہے، حماد اظہر‏

کسانوں کو 50 ارب کی رقم دی گئی ،حماد اظہر‏

وفاقی حکومت کے اخراجات میں مختلف پیکیجز سے اضافہ ہوا ،حماد اظہر‏

100 ارب ایف بی آر کے لیے مختص تھے،حماد اظہر‏

لاک ڈاون کے برے اثرات کے ازالے کیلیے اسٹیٹ بینک نے بھی خصوصی ریلیف دیا ،حماد اظہر‏

اسٹیٹ بینک نے انفرادی قرضوں کیلیے بینکوں کو 800 ارب روپے دیے ،حماد اظہر‏

معیشت کی بہتری کے لیے کنسٹرکشن سیکٹر کو ریلیف دیا ،حماد اظہر‏

عوام کوریلیف پہنچانے کیلیے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا ،حماد اظہر‏

کورونااخراجات،مالیاتی اخراجات کوبیلنس رکھنابجٹ کی ترجیحات میں ہے ،حماد اظہر‏

گزشتہ مال سال میں کوئی ضمنی گرانٹ نہیں دی گئی ، حماد اظہر‏

خصوصی علاقوں فاٹا اور گلگت بلتستان کیلیے خصوصی بجٹ رکھا گیا ہے ،حماد اظہر‏

کفایت شعاری اور غیر ضروری اخراجات میں کمی کو یقینی بنایا جائے گا ،حماد اظہر‏

بلین ٹری سونامی اور نیا پاکستان ہاوسنگ اسکیم کو بجٹ میں تحفظ دیا گیا ہے،حماد اظہر‏

نان ٹیکس ریونیو میں اضافہ کی توقع ہے ،حماد اظہر

‏احساس پروگرام کو 187سےبڑھاکر208 ارب کردیاگیاہے،حماد اظہر

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں