64

کراچی کے علاقے شرافی گوٹھ سے ایک بُریدہ لاش برآمد ہوئی جس کے ٹکڑے کر کے کارٹن میں بند

کراچی کے علاقے شرافی گوٹھ سے ایک بُریدہ لاش برآمد ہوئی جس کے ٹکڑے کر کے کارٹن میں بند کیا ہوا تھا۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پاکستان رینجرز (سندھ) نے تحقیقات کے لیے خصوصی ٹیم تشکیل دی جس نے قتل کے محرکات کا جائزہ لیتے ہوئے انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر پتہ لگایا کہ ایک لڑکا ضعیم عمر 24 سال جو کہ کورنگی نمبر2 کا رہائشی ہے 24 اگست 2019 ؁ء سے لاپتہ ہے۔ پاکستان رینجرز (سندھ) نے لاپتہ ضعیم کا سراغ لگانے کے لیے ٹیکنیکل مانیٹرنگ اور شواہد کی روشنی میں کورنگی کے علاقے میں کارروائی کرتے ہوئے 2 ملزمان شاہد اور زاہد کو گرفتار کیا۔
ابتدائی تفتیش کے دوران ملزمان نے انکشاف کیا کہ وہ دونوں آپس میں بھائی ہیں اور اُن کی مقتول ضعیم کے ساتھ کاروبار کی شراکت داری ہے اور ضعیم نے کاروبار کے لیے اُن کو 36 لاکھ روپے دیئے تھے۔ معاہدے کے تحت جو منافع ضعیم کو دینا تھا وہ نہیں دے رہے تھے اور ضعیم کے بار بار مطالبے پر ملزمان نے ضعیم کو اپنے گھر بلایا اور گلے میں رسی ڈال کر قتل کر دیا۔ بعد ازاں لاش کو ٹھکانے لگانے کے لیے ملزمان نے مقتول ضعیم کی لاش کو 10 حصوں میں کاٹا اور شرافی گوٹھ کے علاقے میں ڈبے میں پیک کر کے پھینک دیا۔ ملزمان کی نشاندہی پر ضعیم کی لاش کے باقی اعضاء کو رنگی اور لانڈھی کے مختلف علاقوں سے اکٹھے کر لیے گئے۔ ملزمان کے قبضے سے قتل میں استعمال ہونے والا ٹوکہ اور چھری بھی برآمد کر لی گئی ہے اوردونوں ملزمان کو قانونی کارروائی کیلئے پولیس کے حوالے کر دیا گیا ہے۔
عوام سے اپیل ہے کہ ایسے عناصر کے بارے میں اطلاع فوری طور پر قریبی چیک پوسٹ،رینجرز ہیلپ لائن 1101 یا رینجرز مددگار واٹس ایپ نمبر03162369996 پر کال یا ایس ایم ایس کے ذریعے دیں۔آپ کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں