41

مری میں پانی کامصنوعی بحران پیداکرکے شہر بھر کے رہائشی علاقوں میں پانی کی شدید قلت

 مری میں پانی کامصنوعی بحران پیداکرکے شہر بھر کے رہائشی علاقوں میں پانی کی شدید قلت پیداکردی گئی ہے کئی کئی روزپانی کی سپلائی نہیں کی جارہی ہے شہر کربلا کا منظر پیش کررہا ہے خواتین بالٹیاں اٹھائے دور دراز سے پانی لانے پر مجبور ہیں جبکہ مبینہ طورپر مال بنانے کے چکروں میں عوام کو خوار کرنے والوں کیخلاف شہرکے عوام بہت جلد مال روڈ اور میونسپل کارپوریشن مری کے دفتر کے باہر بڑے احتجاج کی کال دینے کا اعلان کرنے والے ہیں،حیران کن بات یہ بھی ہے کہ شہر میں پانی کی قلت تو ہے مگر جو تین یا 4 دنوں بعد پانی سپلائی کیاجاتا ہے وہ کسی بھی استعمال کے قابل نہیں ہے بلکہ لوگوں کی پانی کی ٹینکیاں،پائپ لائنیں اور برتن بھی اس بدبودار پانی سے گندے ہوگئے ہیں عوامی حلقوں نے انتظامیہ سے کہا ہے کہ فوری طورنوٹس لے اورپانی کی مین لائنوں اور ٹینکوں کو صاف کرایاجائے گندہ اورمضر صحت پانی پینے سے بڑی تعداد میں مری کے شہری اور سیاح پیٹ کے مرض میں مبتلا ہوکر ہسپتالوں کا رخ کررہے ہیں،ملکہ کوہسار میں گرمائی سیزن اور سیاحوں کا رش عروج پر ہے مگر دوسری طرف شہر میں پانی کا مصنوعی بحران سراٹھا رچکا ہے جسکا فائدہ اٹھاتے ہوئے ٹینکرز اور واٹرمافیا نے بھی برساتی نالوں سے بہنے والے گندے پانی کی سپلائی دن رات جاری رکھی ہوئی ہے اس طرح صاف پانی کی سپلائی نہ ہونے سے مری کے رہائشی اور سیاح شدید مشکلات اور پریشانی سے دوچار ہیں واضع رہے کہ باربار معاملہ اجاگر کرنے کے باوجود انتظامیہ کے ذمہ دارافسران کی جانب سے کوئی نوٹس لیں لیاجارہا ہے اس حوالے سے عوام میں شدید غصہ پایا جارہا ہے عوام کا کہنا ہے کہ ایک طرف شہری پانی کے بھاری بل اد ا کرتے ہیں مگر دوسری طرف شہریوں کو پانی جیسی نعمت سے محروم رکھا جارہا ہے شہریوں نے دھمکی دی ہے کہ اگر صاف پانی کی فراہمی کو یقینی نہ بنایاگیا تو شہری راست اقدام اٹھانے پر مجبور ہونگے۔

کیٹاگری میں : Uncategorized

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں