48

ملکہ کوہسار مری کا گرمائی سیزن اپنے عروج پر ملک اور بیرون ممالک سے بڑی تعداد میں سیاح مری پہنچے ہوئے ہیں

وزیراعظم عمران خان کے سیاحت کے فروغ کیلئے کئے گئے دعوے صرف دعوے ہی نظر آرہے ہیں جس کی مثال عوام کو ملک کے سب سے اہم ترین سیاحتی مرکزنیومری پتریاٹہ ریزار ٹ کی بلاوجہ بندش ہے، ملکہ کوہسار مری کا گرمائی سیزن اپنے عروج پر ملک اور بیرون ممالک سے بڑی تعداد میں سیاح مری پہنچے ہوئے ہیں جبکہ مزید کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے مری اہم ترین سیاحتی مرکز پتریاٹہ ریزارٹ کی طرف ہزاروں سیاح رخ کررہے ہیں لیکن پتریاٹہ چیئرلفٹ بندہونے سے ان کو سخت مایوسی کاسامنا کرنا پڑتا ہے کچھ دن قبل تیز آندھی چلنے سے پتریاٹہ کیبل کار کا آئینی رسہ سلپ ہوگیا تھا جس کے باعث درجنوں سیاح اس میں پھنس گئے تھے جن کو طویل آپریشن کے بعد باحفاظت نکال لیاگیا تھا اس دوران چیئرلفٹ آپریشن رکھی گئی بعد میں ڈپٹی کمشنر راولپنڈی نے پتریاٹہ چیئرلفٹ او رپنڈی پوائنٹ کی چیئرلفٹ کو بند کردیا تھا بعدازاں پنڈی پوائنٹ چیئرلفٹ کو دوبارہ کھول دیا گیا جبکہ پتریاٹہ چیئرلفٹ جو محفوظ ترین ہے کو تاحال نامعلوم وجوہات کی بنا پر نہ کھولا گیا ہے جو ہزاروں کی تعداد میں آنے والے سیاحوں کے ساتھ بہت زیادتی ہے جبکہ انجمن تاجران مری کے صدر،سینئر نائب صدر اور دیگر عہدیداروں نے بھی چیئرلفٹ کی بندش پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ تاجروں کا کاروبار بھی چیئرلفٹ بند ہونے سے بری طرح متاثر ہورہا ہے جبکہ محکمہ سیاحت پنجاب اس ریزارٹ کو خود چلارہا ہے جہاں حکومت پنجاب محکمہ سیاحت کو روزانہ کی بنیاد پر حاصل ہونے والی لاکھوں روپے کی آمدن بھی ختم ہوچکی ہے وہاں ملک اور بیرون ممالک سے آنے والے ہزاروں سیاح بھی مایوس لوٹ رہے ہیں سیاحوں،تاجروں اور اہلیان علاقہ نے مری سے منتخب ممبر قومی اسمبلی وممبر پنجاب اسمبلی، حکومت پنجاب،وزیر سیاحت پنجاب،سیکرٹری سیاحت پنجاب اورکمشنر وڈپٹی کمشنر راولپنڈی سے مطالبہ کیا ہے کے پنڈی پوائنٹ کی چیئرلفٹ کھولنے کے ساتھ ساتھ پتریاٹہ چیئرلفٹ کو بھی سیاحوں کیلئے کھولاجائے تاکہ جہاں حکومت کی آمد ن ختم نہ ہووہاں مقامی لوگوں کا روزگار بھی بحال ہوسکے۔

کیٹاگری میں : Uncategorized