57

مری میں تعمیرات پر لگائی گئی غیر قانونی پابندی کو موجودہ حکومت پابندی نہ اٹھا سکی

مری سابقہ دور حکومت میں مری میں تعمیرات پر لگائی گئی غیر قانونی پابندی کو موجودہ حکومت پابندی نہ اٹھا سکی جس کے باعث بااثر افرد نے بغیر نقشہ پاس کرائے غیر قانونی تعمیرات زور شور سے شروع کررکھی ہیں جس کاتمام تر نقصان میونسپل کاپوریشن مری کو ہورہا ہے کیونکہ نقشہ فیس کی مدمیں کروڑوں روپے میونسپل کارپوریشن کو نقصان ہورہا ہے اور نقشہ فیس جمع نہ ہونے سے میونسپل کارپوریشن مری مالی مشکلات سے دوچار ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ غیرقانونی تعمیرات کوروکاجائے اور میونسپل بائی لاز کے مطابق نقشہ فیسیں وصول کرکے شہریوں کو تعمیرات کی اجازت دی جائے تاکہ رات کے اندھیروں اور پردے لگانے کے بجائے لوگ دن کی روشنی میں اپنے گھر قانون کے مطابق تعمیرکرسکے اور ایم سی مری کے خزانے میں بھی بھاری فیسیں جمع ہوسکیں نقشے پاس ہونے والی تعمیرات ایم سی مری کے اہلکاروں کی نگرانی میں ہواور بائی لاز کی خلاف ورزی نہ ہونے دی جائے اوراگر کوئی شخص قانون کی خلاف ورزی کرے تو اسکے خلاف اور متعلقہ اہلکاروں کیخلاف بھی سخت ترین کاروائی کی جائے،شہریوں اور سیاحوں نے کہا ہے کہ اگرموجودہ نئے پاکستان میں بھی سابقہ حکومت کی پالیسیوں پر عمل کیاجارہا ہے تو پھر یہ تبدیلی کیسی؟عوامی اور سیاحتی حلقوں کا کہنا ہے کہ ان غیرقانونی اوربلند عمارتوں کی تعمیرات کی وجہ سے جہاں اس اہم ترین سیاحتی مرکز کا حسن ماند پڑرہا ہے وہاں اسکے قدرتی ماحول پر بھی منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں انہوں نے وزیراعظم،وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ مری میں فوری طور پر تعمیرات پر غیر قانونی عائد پابندی کو اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

کیٹاگری میں : Uncategorized

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں