Hajj Umrah 31

کورونا وباء کے باعث حج عمرہ انڈسٹری پر عائد ٹیکس

اسلام آباد:کورونا وباء کے باعث حج عمرہ انڈسٹری پر عائد ٹیکس 2020/21 کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے مسترد کرتے ہوئے اس ضمن میں سفارشات تیار کر کے قومی اسمبلی میں بھیج دی ہیں۔ قبل ازیں چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے خزانہ سینیٹر محمد طلحہ محمود اور کمیٹی اراکین جس میں حکومت اور اپوزیشن کے سینیٹرز شامل تھے سے حج ٹورز آپریٹرز کے نمائندہ وفد نے ملاقات کی اور اپنے تحفظات سے آگاہ کیا ۔ حج آرگنائزر ایسوسی ایشن ہوپ اسلام آباد زون کے اس وفد کی قیادت چیئرمین اسلام آباد زون محمد امجد کیانی نے کی جبکہ وفد میں ، محمد نبیل جنرل سیکرٹری ، قاضی محمد جمیل جابر سابق چیئرمین ہوپ اسلام آباد زون ، اصغر علی شیخ الیکشن کمیشن ہوپ اسلام آباد اور ملک مزمل سینیئر حج آرگنائزر شامل تھے ۔ ملاقات میں قائمہ کمیٹی میں شامل دس سے زائد سینیٹرز کو حج ٹورز آپریٹرز کو ٹیکسسز سے متعلقہ درپیش مسائل سے تفصیل سے آگاہ کیا اور بتایا کہ کورونا وباء کے باعث 2020 اور 2021 میں حج عمرہ نہ ہونے سے ملک بھر کے ٹورز آپریٹرز شدید مالی بحران کا شکار ہو گئے ہیں ۔ جبکہ ایف بی آر کیطرف سے ٹیکس نوٹسسز اور دفاتر کو سیل کرنے کی وجہ سے ملک بھر کے ٹورز آپریٹرز میں سراسمیگی پھیل گئی ہے ۔ کروڑوں روپے ٹیکسسز دینے والی انڈسٹری کورونا وباء کے باعث بدحالی کا شکار ہے ۔ لہذا ایف بی آر کی طرف سے جاری شدہ نوٹسسز واپس لئے جائیں اور 2020/21 کا ٹورز آپریٹرز پر سالانہ عائد ٹیکس اور ود ہولڈنگ ٹیکس ختم کیا جائے ۔ اور انہیں ہراساں بھی نہ کیا جائے ۔ جس پر قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کے سینیٹرز نے اتفاق کیا ۔ اور اسی ملاقات میں پیش کردہ سفارشات کی روشنی میں گزشتہ روز سینیٹ اجلاس میں چیئرمین قائمہ کمیٹی سینیٹر محمد طلحہ محمود نے تقریر کرتے ہوئے بتایا کہ کورونا وباء کے پیش نظر حج عمرہ سے وابستہ افراد کو 2020/21 کے لئے ٹیکس سے مستثنیٰ قرار دیکر اس ضمن میں سفارشات کو حتمی شکل دی گئی ہے اور ان سفارشات کو قومی اسمبلی میں بھیج دیا گیا ہے ۔ سینیٹر محمد طلحہ محمود نے یقین دہانی کرائی کہ ایف بی آر کی جانب سے ٹورز آپریٹرز کو جاری نوٹسسز بھی واپس لے لئے جائینگے ۔ جس پر ہوپ اسلام آباد زون نے سینیٹر محمد طلحہ محمود ور دیگر اراکین قائمہ کمیٹی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اپنی جانب سے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔